Tuesday , October 24 2017
Home / Top Stories / گجرات انتخابی شیڈول کے اعلان سے الیکشن کمیشن کا گریز

گجرات انتخابی شیڈول کے اعلان سے الیکشن کمیشن کا گریز

سیاسی مفاد کیلئے مرکز کا دباؤ ،کانگریس کا ردعمل ، ہماچل پردیش کیلئے شیڈول جاری
نئی دہلی ۔ 12 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) الیکشن کمیشن نے آج ہماچل پردیش میں اسمبلی انتخابات کی تواریخ کا اعلان کیا لیکن گجرات انتخابات کے بارے میں تواریخ کے قطعی اعلان سے گریز کیا حالانکہ ان دو ریاستوں میں اسی مدت کے دوران انتخابات ہوں گے۔ کانگریس نے مرکز کے اس رویہ کے خلاف شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے۔ گجرات اور ہماچل پردیش اسمبلی کی میعاد جنوری میں ختم ہورہی ہے، اس لئے توقع تھی کہ دونوں ریاستوں کے انتخابی شیڈول کا ایک ساتھ اعلان کیا جائے گا۔ چیف الیکشن کمشنر اے کے جوٹی نے کہاکہ گجرات اسمبلی انتخابات 18 ڈسمبر سے قبل منعقد ہوں گے جبکہ اسی دن ہماچل پردیش انتخابات کے نتائج کا اعلان ہوگا۔ جب ان سے دو ریاستوں کے انتخابی شیڈول کا ایک ساتھ اعلان نہ کرنے کے بارے میں پوچھاگیا تو انہوں نے کہا کہ طویل عرصہ تک انتخابی ضابطہ اخلاق کا نفاذ غیرمنصفانہ ہوگا کیونکہ اس سے ترقیاتی کام متاثر ہوں گے۔ انہوں نے کہاکہ ہماچل پردیش اسمبلی کی میعاد 7 جنوری اور گجرات اسمبلی کی 22 جنوری کو ختم ہورہی ہے۔ چیف الیکشن کمشنر نے بتایا کہ 1993ء، 1994ء اور 2002ء میں بھی دونوں ریاستوں کے انتخابی شیڈول کا علحدہ اعلان کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ ہماچل پردیش کے عوام نے الیکشن کمیشن سے نمائندگی کی ہیکہ انتخابات نومبر 15 کے بعد منعقد نہ کئے جائیں کیونکہ اس وقت موسم کافی سخت رہے گا اور پہاڑی ریاست میں پہنچنا دشوار ہوجائے گا لیکن کانگریس نے مرکز پر الزام عائد کیا کہ الیکشن کمیشن پر دباؤ ڈالتے ہوئے یہ قدم اٹھایا گیا۔ پارٹی ترجمان رندیپ سرجے والا نے ٹوئیٹر پر ویڈیو پیام میں کہا کہ اب یہ واضح ہوچکا ہے کہ مودی حکومت اور بی جے پی الیکشن کمیشن پر دباؤ ڈال رہی ہے تاکہ انہیں سیاسی فائدہ ہوسکے۔ گوا کے بعد ہماچل پردیش دوسری ریاست ہوگی جہاں رائے دہی میں صدفیصد پیپر ٹرائل کا الیکٹرانک ووٹنگ مشین کے ساتھ استعمال ہوگا اور ووٹوں کی گنتی کا پیپر ٹرائل سے بھی تقابل کیا جائے گا۔ الیکشن کمیشن کے شیڈول کے مطابق ہماچل پردیش میں 9 نومبر کو رائے دہی ہوگی اور 18 ڈسمبر کو نتائج کا اعلان کیا جائے گا۔ دونوں ریاستوں میں کانگریس اور بی جے پی کے مابین سخت مقابلہ ہوگا اور انتخابی تیاریاں زور وشور سے جاری ہیں۔

TOPPOPULARRECENT