Wednesday , August 23 2017
Home / ہندوستان / گجرات فسادات 2002ء کے 11 مجرمین کو سزائے عمرقید

گجرات فسادات 2002ء کے 11 مجرمین کو سزائے عمرقید

احمدآباد ۔ 4 اگست (سیاست ڈاٹ کام) تحت کی عدالت کے ملزمین کو بری کردینے کے فیصلہ کو بالائے طاق رکھتے ہوئے گجرات ہائیکورٹ نے آج 11 افراد کو 2002ء کے گجرات فسادات میں ضلع مہسانہ کے دیہات میدہ ادرج میں دو افراد کے قتل کے جرم میں عمر قید کی سزاء سنائی۔ جسٹس اننت ڈوے اور جسٹس بی این کاریا نے مجرمین کو عمر قید کی سزاء سناتے ہوئے ریاستی حکومت کو اختیار دیا کہ 14 سال کی سزائے قید کے بعد انہیں حکومت چاہے تو رہا کرسکتی ہے۔ ہائیکورٹ نے فی کس 10 ہزار روپئے کا جرمانہ بھی عائد کیا اور انہیں خودسپردگی کیلئے 10 ہفتوں کی مہلت دی۔ گذشتہ ماہ ہائیکورٹ نے 27 ملزمین میں سے 11 کو خاطی قرار دیا تھا۔ دیہات میدہ ادرج میں اقلیتی فرقہ کے باپ بیٹی کا قتل ہوا تھا۔ ان افراد کو مہسانہ کی تیزگام عدالت نے 14 جون 2005ء کو بری کردیا تھا۔ 3 مارچ 2002ء کو کالو میاں سید اور ان کی دختر حسینہ بی بی کا قتل ہوا تھا۔ استغاثہ کے بموجب 200 افراد کے ہجوم نے مہلوکین کے مکان کو گھیر لیا تھا جنہوں نے جوئیتارم پرجاپتی کے مکان میں پناہ لی تھی۔ ان دونوں کو زندہ جلادیا گیا تھا۔ اس واقعہ کے 6 عینی شاہدین تھے۔ حکومت گجرات اور مہلوکین کے خاندان نے تحت کی عدالت کے فیصلہ کو ہائیکورٹ میں چیلنج کیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT