Thursday , August 17 2017
Home / جرائم و حادثات / گجرات پولیس کا خفیہ آپریشن، ٹولی چوکی سے ملزم گرفتار

گجرات پولیس کا خفیہ آپریشن، ٹولی چوکی سے ملزم گرفتار

ہرین پانڈیا قتل مقدمہ میں غلام حسین شیخ کی ٹرانزٹ وارنٹ پر گجرات منتقلی
حیدرآباد۔ 20 اکتوبر (سیاست نیوز) گجرات پولیس کے انسداد دہشت گردی اسکواڈ (اے ٹی ایس) نے سال 2003ء میں ہوئے گجرات کے سابقہ وزیر داخلہ ہرین پانڈیا قتل کیس میں ملوث ملزم کو ٹولی چوکی حکیم پیٹ سے گرفتار کرلیا۔ ذرائع نے بتایا کہ 49 سالہ غلام ظفر، غلام حسین شیخ متوطن احمدآباد گجرات پولیس کو گزشتہ 12 سال سے مطلوب تھا اور پانڈیا قتل کیس کے بعد وہ حیدرآباد منتقل ہوگیا تھا۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ گجرات اے ٹی ایس نے خفیہ آپریشن کے تحت حکیم پیٹ ٹولی چوکی آئی اے ایس کالونی میں اچانک دھاوا کرتے ہوئے غلام حسین شیخ کو گرفتار کرکے یہاں کی ایک مقامی عدالت میں پیش کیا اور بعدازاں ٹرانزٹ وارنٹ پر اسے گجرات منتقل کردیا۔ گرفتار ملزم پر الزام ہے کہ اس نے پانڈیا قتل کیس کے اہم ملزم محمد ظہیر اقبال شیخ کو مبینہ طور پر پستول اور کارتوس برآمد کئے تھے جو جرم کے ارتکاب میں استعمال کئے گئے تھے۔ ہرین پانڈیا قتل کے بعد گجرات پولیس کی جانب سے 40 سے زائد ملزمین کو گرفتار کیا تھا اور ملزمین کی فہرست میں غلام حسین شیخ کا نام شامل ہونے کی اطلاع پر وہ احمدآباد سے حیدرآباد منتقل ہوگیا تھا اور اپنے بیوی بچوں کے ہمراہ شہر میں کرایہ کے فلیٹ میں مقیم تھا۔ واضح رہے کہ سال 2010ء میں احمدآباد کی پوٹا خصوصی عدالت میں 22 ملزمین کو قصوروار پائے جانے پر انہیں سزا سنائی تھی جبکہ 22 ملزمین کو نظام آباد سے بری کردیا گیا۔ غلام حسین شیخ کے خلاف پوٹا عدالت نے غیرضمانتی وارنٹ جاری کیا تھا اور پولیس کو اس کی تلاش تھی۔ ڈیٹیکشن کرائم برانچ (ڈی سی بی) نے26 مارچ 2003ء میں گجرات کے سابق وزیر داخلہ ہرین پانڈیا کو گولی مارکر ہلاک کئے جانے کے بعد ایک مقدمہ جس کا نمبر DCB-6 ہے اور اس کے تحت حیدرآباد کے کئی مسلم نوجوانوں کے علاوہ مولانا عبدالقوی، مولانا نصیرالدین اور دیگر کو گرفتار کیا تھا۔ ڈپٹی کمشنر پولیس کرائم برانچ مسٹر ہیمانشو شکلا اس کیس کی تحقیقات کررہے ہیں اور مولانا عبدالقوی کی دہلی ایرپورٹ پر گرفتاری میں اہم رول ادا کیا تھا۔ بتایا جاتا ہے کہ غلام حسین شیخ احمدآباد میں ڈرائیور کی حیثیت سے ملازمت کرتا تھا اور سال 2002ء میں گودھرا فسادات کے انتقام کیلئے مبینہ طور پر اس نے لشکر طیبہ اور دیگر دہشت گرد تنظیموں کی ایماء پر گجرات میں دہشت گرد نیٹ ورک میں شامل ہوگیا تھا۔ ہرین پانڈیا قتل کیس میں انڈر ورلڈ ڈان داؤد ابراہیم، مفتی صوفیان، رسول خاں پارٹی اور دیگر ملزمین ہنوز مفرور بتائے گئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT