Saturday , September 23 2017
Home / Top Stories / گجرات کانگریس ارکان اسمبلی کی سونیا گاندھی سے ملاقات

گجرات کانگریس ارکان اسمبلی کی سونیا گاندھی سے ملاقات

اسمبلی انتخابات کی حکمت عملی پر غور ، پارٹی کو دوبارہ برسراقتدار لانے کاعہد
نئی دہلی ۔21 اگسٹ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس کی قیادت نے گجرات سے تعلق رکھنے والے اپنے ارکان اسمبلی کو آج ہدایت کی کہ وہ مہاتما گاندھی کی ریاست میں متحد رہتے ہوئے سچائی اور اُن کے نظریہ کیلئے جدوجہد جاری رکھیں۔ کانگریس کے اعلیٰ قائدین نے گجرات کے ارکان اسمبلی سے آج یہاں بات چیت کے دوران یہ ہدایت کی ۔ اس ریاست میں رواں سال کے اواخر میں ہونے والے اسمبلی انتخابات سے قبل حکومت عملی پر غور و خوض کے لئے یہ کلیدی اجلاس منعقد کیا گیا تھا۔ کانگریس کی صدر سونیا گاندھی نے اپنی رہائش گاہ پر منعقدہ اجلاس کی صدارت کی جس میں اس پارٹی کے نائب صدر راہول گاندھی ، اے آئی سی سی کے جنرل سکریٹری اور گجرات میں تنظیمی اُمور کے انچارج اشوک گہلوٹ کے علاوہ پارٹی کے کلیدی حکمت عملی ساز احمدپٹیل نے شرکت کی۔ بعد ازاں راہول گاندھی نے ٹوئیٹر پر لکھا کہ ’’گجرات سے تعلق رکھنے والے کانگریس کے ارکان اسمبلی اور قائدین کے ساتھ آج ایک اچھی ملاقات ہوئی ‘‘ ۔ نصف گھنٹہ سے زائد وقت تک منعقدہ اس اجلاس میں سونیا گاندھی اور راہول گاندھی نے سچائی اور جمہوریت کی جدوجہد میں فتح کے ساتھ اُبھرنے پر اپنی پارٹی کے ارکان اسمبلی کو مبارکباد دی ۔ یہ دراصل گجرات میں کانگریس کے چند ارکان اسمبلی کے انحراف اور انھیں خریدنے کیلئے بعض گوشوں سے کی گئی کوششوں کے باوجود احمد پٹیل کی کامیابی کا بالواسطہ حوالہ تھا ۔ گجرات کے رکن اسمبلی اور کانگریس کے ترجمان شکتی سنہ گوہل نے پی ٹی آئی سے کہا کہ ’’ سونیا گاندھی اور راہول گاندھی نے اپنی پارٹی کے ارکان اسمبلی کو امتحان کی اس گھڑی میں متحد رہنے پر مبارکباد دی اور سچائی اور نظریات کی اس لڑائی کو جاری رکھنے کی ہدایت کی‘‘ ۔ انھوں نے مزید کہا کہ ’’ان قائدین نے اپنے ارکان اسمبلی سے کہاکہ کانگریس محض اقتدار پر قبضہ کرنے کیلئے ہی نہیں بلکہ مہاتما گاندھی کے گجرات میں اعلیٰ اقدار کو بحال کرنے کیلئے انتخابی مقابلہ کرتی ہے ‘‘ ۔ انھوں نے کہا کہ پارٹی کی قیادت نے اپنے ارکان اسمبلی پر زور دیا کہ وہ اس قسم کی طاقتوں کے خلاف متحدہ لڑائی جاری رکھیں جس سے انھیں عوامی تائید و حمایت بھی حاصل ہوگی ۔ گجرات میں رواں سال کے اواخر کے دوران اسمبلی انتخابات منعقد ہوں گے اور نریندر مودی کی اس ریاست میں گزشتہ دہائیوں سے اقتدار سے باہر رہنے کے بعد اب وہ (کانگریس) دوبارہ اقتدار حاصل کرنا چاہتی ہے ۔ کانگریس کو اس ریاست میں حالیہ عرصہ کے دوران ایک زبردست دھکا لگا جب اُس کے ایک اہم لیڈر شنکر سنہ واگھیلا نے چند ارکان اسمبلی کے ساتھ کانگریس کو چھوڑ دیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT