Friday , August 18 2017
Home / سیاسیات / گجرات کا حالیہ تشدد ۔ نریندر مودی کی جذباتی سیاست کا ردعمل

گجرات کا حالیہ تشدد ۔ نریندر مودی کی جذباتی سیاست کا ردعمل

فرقہ وارانہ ہم آہنگی اور امن و آشتی پر کانگریس پارٹی کاربند ۔ راہول گاندھی کا ادعا

سرینگر ۔ 27 اگست (سیاست ڈاٹ کام) نائب صدر کانگریس راہول گاندھی نے آج گجرات میں تحفظات کے مطالبہ پر پٹیل برداری کے احتجاج کے دوران تشدد کے واقعات پر وزیراعظم نریندر مودی کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ یہ جذباتی سیاست کا ردعمل ہے، جس پر نریندر مودی عمل پیرا ہیں۔ جموں و کشمیر کے 3 روزہ دورہ پر آئے ہوئے کانگریس لیڈر نے ویمپورہ ٹاؤن میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے وزیراعظم (نریندر مودی) نے عوام کے جذبات اور برہمی کا استحصال کیا تھا اور اس طرح کی سیاست ملک بھر میں پھیل جانے کا خطرہ ہے جیسا کہ اب گجرات میں دیکھا جارہا ہے۔ انہوں نے یہ سوال کیا کہ تحفظات کے مطالبہ پر پٹیل برادری کے احتجاج کے دوران تشدد کیوں پھوٹ پڑا، جس میں 9 افراد ہلاک ہوگئے

اور کہا کہ یہ کہیں نریندر کی نفرت انگیز سیاست کا نتیجہ تو نہیں ہے جنہوں نے عوام کے جذبات بھڑکاتے ہوئے مسند اقتدار پر پہنچے تھے کیونکہ تصادم کی سیاست سے صرف اور صرف نریندر مودی کو ہی فائدہ حاصل ہوا ہے۔ راہول گاندھی نے بتایا کہ وہ چاہتے ہیکہ عوام آپس میں متصادم اور غم و غصہ کا اظہار کریں اور یہ ایک تلخ حقیقت ہے لیکن کانگریس کا یہ ایقان ہیکہ نفرت اور عداوت کی سیاست سے نریندر مودی کے سواء کسی کو فائدہ حاصل نہیں ہوگا اور نہ ہی یہ گھناونی سیاست ملک، کسانوں، غریبوں اور تاجروں کے حق میں ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کا ایقان ہر ایک کو ساتھ لے کر چلنے کا ہے۔ وادی کشمیر میں گذشتہ 25 سال سے جاری تشدد اور تخریب کا تذکرہ کرتے ہوئے کانگریس لیڈر نے کہا کہ تجربہ اور مشاہدہ سے یہ ثابت ہوگیا کہ تشدد سے کسی کو فائدہ نہیں ہوتا۔ بی جے پی پر تنقید کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وہ چاہتے ہیکہ عوام ایک دوسرے پر غصہ آتاردیں اور آپس میں لڑتے رہیں اور یہی ان کا وطیرہ اور سیاسی ایجنڈہ ہے۔ اس کے برعکس ہر ایک فرقہ اور برادری میں امن و آتشی برقراری کانگریس کا نصب العین ہے۔

راہول گاندھی نے این ڈی اے حکومت کسان مخالف قرار دیا اور بتایا کہ ابتداء میں وہ سمجھ رہے تھے کہ یہ سوٹ بوٹ کی سرکار ہے لیکن اب ہمیں یہ محسوس ہوگیا ہیکہ وہ صرف 10 بڑے تجارتی گھرانوں (کارپوریٹس) کی پشت پناہی کررہی ہے۔ علاوہ ازیں نائب صدر کانگریس راہول گاندھی نے جموں و کشمیر کے حالات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی بی جے پی کی مخلوعہ حکومت دراصل موقع پرست اتحاد ہے جوکہ ریاستی عوام کیلئے بے فیض ثابت ہورہا ہے۔ انہوں نے پلوامہ میں ایک ریالی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ان کے آبا و اجداد کے جڑیں یہاں پیوست ہے اور انہیں یہاں آنے پر اپنے مکان واپسی کی طرح مسرت ہوئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ پیشرو یو پی اے حکومت جموں و کشمیر میں کئی ایک ترقیاتی اسکیمات شروع کی تھیں لیکن موجودہ این ڈی اے حکومت عمل آوری میں ناکام ہوگئی ہے۔ راہول گاندھی نے بتایا کہ ایک طرف انہیں جموں و کشمیر کے دورہ سے خوشی بھی ہورہی ہے تو دوسری طرف یہاں عوام کی مشکلات اور مسائل دیکھ کر دکھ بھی ہورہا ہے۔ انہوں نے ضرورتمندوں کو کانگریس کی جانب سے امداد کا بھی تیقن دیا۔

TOPPOPULARRECENT