Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / گرام جیوتی پروگرام کیلئے رقومات کی عدم فراہمی، صرف عہدیداروں کو ذمہ داریاں

گرام جیوتی پروگرام کیلئے رقومات کی عدم فراہمی، صرف عہدیداروں کو ذمہ داریاں

حکومت کا پروگرام ٹی آر ایس جیوتی میں تبدیل، آر چندرشیکھر ریڈی تلگودیشم قائد کا بیان
حیدرآباد 16 اگسٹ (سیاست نیوز) تلنگانہ تلگودیشم پارٹی نے چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندرشیکھر راؤ کے طرز عمل پر شدید برہمی کا اظہار کیا اور کہاکہ گرام جیوتی پروگرام کے لئے حکومت رقومات فراہم نہ کرتے ہوئے عہدیداروں کو صرف کاموں کی ذمہ داریاں سونپ رہی ہے اور اس طرح حکومت کی جانب سے شروع کیا جانے والا گرام جیوتی پروگرام درحقیقت ٹی آر ایس جیوتی میں تبدیل ہوتا دکھائی دے رہا ہے۔ آج یہاں این ٹی آر ٹرسٹ بھون میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے مسٹر آر چندرشیکھر ریڈی رکن پولیٹ بیورو تلنگانہ تلگودیشم پارٹی نے یہ بات کہی اور ریاستی حکومت کو حدف ملامت بنایا اور الزام عائد کیاکہ حکومت کی جانب سے شروع کیا جانے والا گرام جیوتی پروگرام ٹی آر ایس جیوتی پروگرام میں تبدیل ہوگیا ہے۔ مسٹر آر چندرشیکھر ریڈی نے ریاستی حکومت بالخصوص چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندرشیکھر راؤ سے دریافت کیاکہ تلنگانہ میں گزشتہ سال نئی حکومت کی تشکیل پانے کے بعد روبہ عمل لائی گئی اسکیم ’’ہمارا گاؤں ۔ ہمارا منصوبہ‘‘ اور گرام جیوتی پروگرام میں کیا فرق ہے۔ اس کی فوری طور پر وضاحت کرنے کا مسٹر کے چندرشیکھر راؤ سے مطالبہ کیا اور کہاکہ فنڈس پولنگ (رقومات کو اکٹھا کرنے) کے نام پر حکومت تلنگانہ عوام کو بے وقوف بنارہی ہے۔ انھوں نے حکومت پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہاکہ تلنگانہ حکومت پنچایتوں کو راست طور پر ایک روپیہ بھی فراہم نہیں کررہی ہے۔ رکن پولیٹ بیورو تلگودیشم پارٹی مسٹر آر چندرشیکھر ریڈی نے الزام عائد کیاکہ حکومت کی جانب سے جی اوز نمبر 63 اور 64 دستور کے مغائر جاری کئے گئے۔ بعدازاں جی اوز کی اجرائی کے ذریعہ سرپنچوں کے رتبہ کو نیچا کر دکھایا گیا۔ اسی دوران قائد تلنگانہ تلگودیشم پارٹی مسٹر ای دیاکر راؤ نے کہاکہ گرام جیوتی پروگرام کی خود سرپنچوں کی جانب سے پرزور مخالفت کی جارہی ہے۔ انھوں نے تلنگانہ عوام سے گرام جیوتی پروگرام کی عمل آوری میں ناکامیوں پر حکومت کو جھنجوڑنے کی اپیل کی اور کہاکہ گزشتہ انتخابات کے موقع پر ٹی آر ایس کی جانب سے کئے گئے وعدوں میں اب تک کسی ایک وعدے کو بھی پورا نہیں کرسکی۔

TOPPOPULARRECENT