Tuesday , October 24 2017
Home / شہر کی خبریں / گرمائی تعطیلات پرخانگی اسکول انتظامیہ کی برہمی

گرمائی تعطیلات پرخانگی اسکول انتظامیہ کی برہمی

خلاف ورزی پر سخت کارراوئی کرنے حکومت کا انتباہ
حیدرآباد 15 اپریل (سیاست نیوز) حکومت کی جانب سے ایک ہفتہ قبل گرمی کے سبب اچانک گرمائی تعطیلات کے اعلان سے خانگی اسکول انتظامیہ میں بے چینی پیدا ہوچکی ہے۔ خانگی اسکول انتظامیہ کی جانب سے حکومت کے اِس اقدام کی مخالفت کی جارہی ہے اور بعض اسکولوں نے گرمائی تعطیلات 16 اپریل سے نہ دینے کا اعلان بھی کیا ہے۔ جبکہ محکمہ تعلیمات نے شدید گرمی کے سبب اسکولوں کو فوری طور پر گرمائی تعطیلات دینے کے احکام جاری کردیئے ہیں۔ اسکول انتظامیہ کا استدلال ہے کہ اچانک تعطیلات کا اعلان کیا جانا اور وہ بھی ایسے وقت جبکہ تعطیلات جاری ہیں، اسکول انتظامیہ کے لئے مشکلات کا باعث ہے۔ چونکہ بیشتر اسکول انتظامیہ گرمائی تعطیلات کے لئے طلبہ کو تعلیمی مصروفیات جاری رکھنے کے لئے گھر میں تعطیلات کے دوران ہوم ورک دیا جاتا تھا لیکن حکومت نے 14 اپریل کو امبیڈکر جینتی کی تعطیل اور 15 اپریل کو رام نومی کی تعطیل کے دوران اچانک 16 اپریل سے تعطیلات کا اعلان کردیا جس کی وجہ سے اسکول انتظامیہ گرمائی تعطیلات کی مصروفیات حوالہ کرنے میں ناکام رہے۔ بعض اسکولوں میں اساتذہ کو تعطیلات کے علاوہ فیس کی عدم وصولی پر بھی برہمی پائی جارہی ہے۔ اسکول انتظامیہ اِس بات سے فکرمند ہے کہ اُنھیں اساتذہ کو ماہ اپریل کی مکمل تنخواہوں ادا کرنی ہوں گی جبکہ صرف نصف مہینہ تک خدمات حاصل کی گئی ہیں لیکن شاید انتظامیہ یہ بھول رہے ہیں کہ طلبہ کو تعطیلات کے باوجود بھی وہ مکمل فیس وصول کرتے ہیں۔ گرمائی تعطیلات کے اعلان کے ساتھ ہی فیس وصولی کا عمل بند ہونے کے خدشہ سے بھی اسکول انتظامیہ میں برہمی پائی جاتی ہے کیوں کہ ان کا احساس ہے کہ اب 13 جون تک فیس وصولی کی کوئی راہیں باقی نہیں رہیں اور نہ ہی ان گرمائی تعطیلات کے دوران کتب اور یونیفارمس کی فروخت عمل میں لائی جاسکتی ہے۔ حکومت نے ریاست میں شدید گرمی اور درجہ حرارت میں ہورہے تیزی سے اضافہ کے پیش نظر طلبہ کی صحت کو متاثر ہونے سے بچانے کے لئے گرمائی تعطیلات کا قبل ازوقت اعلان کیا ہے۔ اِس پر کسی قسم کی تنقید کیا جانا دراصل حکومت کی جانب سے کئے گئے اچھے اقدام کو نشانہ بنائے جانے کے مترادف ہے۔ حکومت نے واضح طور پر کہہ دیا کہ اِن تعطیلات کے احکام کی جو اسکول خلاف ورزی کریں گے اُن کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT