Friday , October 20 2017
Home / Top Stories / گرما کی لہر کی پیش قیاسی‘ تلنگانہ پورٹل کا آغاز

گرما کی لہر کی پیش قیاسی‘ تلنگانہ پورٹل کا آغاز

عوام کو ایس ایم ایس کے ذریعہ تفصیلات کی فراہمی : ڈپٹی چیف منسٹر محمود علی
حیدرآباد۔18اپریل ( پی ٹی آئی) حکومت تلنگانہ نے گرمی کی لہر کی پیش قیاسیوں اور کسی ہنگامی و ناگہانی صورتحال سے نمٹنے کیلئے متعلقہ مقامات پر دستیاب ضروری وسائل سے متعلق معلومات پر مبنی ایک ویب پورٹل کا آغاز کی۔ تلنگانہ کے ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے اس ویب سائٹ کی رونمائی کے بعد کہا کہ موسم کی وقتاً فوقتاً تبدیلیوں کے بارے میں صحیح تفصیلات اور حقیقی معلومات حاصل کرنے کیلئے ریاست کے تقریباً 885 مقامات پر سنسرس نصب کئے گئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ’’ ان تفصیلات کا تجزیہ کیا جائے گا اور یہ نتیجہ اخذ کیا جائے گا کہ آیا فی الوقعی گرمی کی شدید لہر جیسی صورتحال متوقع ہے ۔ ایسا ہونے کی صورت میں عوام کو ایس ایم ایس کے ذریعہ خبردار کیا جائے گا ۔ علاوہ ازیں اس پورٹل پر ریاست تلنگانہ میں درجہ حرارت کے تاریخی رجحانات اور دیگر متعلقہ اعداد و تفصیلات پیش کی جائے گی ‘‘ ۔ محمد محمود علی نے مزید کہا کہ محکمہ صحت و طبابت کو ہدایت کی گئی ہے کہ تمام سرکاری دواخانوں اور ابتدائی طبی مراکز میں او آر ایس اور آئی وی فلوئیڈس کا خاطر خواہ ذخیرہ رکھا جائے تاکہ سن اسٹروکس( لُولگنے) سے متاثرہ مریضوں کی موثر طبی دیکھ بھال اور علاج کو یقینی بنایا جاسکے ۔ ایک سوال پر ڈپٹی چیف منسٹر نے جواب دیا کہ تلنگانہ میں گرمی کی لہر اور لولگنے کے سبب تاحال صرف 19 اموات کی سرکاری طور پر اطلاع دی گئی ہے ۔ قبل ازیں ریاستی حکومت نے ایک سرکاری بیان میں کہا تھا کہ گرمی کی لہر کے نتیجہ 66افراد فوت ہوئے ہیں ۔ بعدازاں ایک سینئر سرکاری عہدیدار نے لُولگنے سے فوت ہونے والوں کی تعداد 35بتائی تھی ۔ متوفیوں کی تعداد میں فرق کے بارے میں ایک سوال پر مسٹر محمود علی نے جواب دیا کہ حکومت اصل تعداد کی تنقیح و توثیق میں مصروف ہے ۔
تلنگانہ میں شدید گرمی کے درمیان طوفانی ہواؤں اور بارش کا امکان
حیدرآباد۔18اپریل ( سیاست نیوز) محکمہ موسمیات نے تلنگانہ میں شدید گرمی کی لہر کی وارننگ دیتے ہوئے پیش قیاسی کی کہ آئندہ 48 گھنٹوں کے دوران حیدرآباد کے علاوہ اضلاع رنگاریڈی ‘ عادل آباد ‘ نظام آباد ‘ کریم نگر ‘ کھمم ‘ میدک ‘نلگنڈہ اور ورنگل میں طوفانی ہواؤں کے ساتھ بارش اور ژالہ باری ہوسکتی ہے ۔ محکمہ موسمیات کے ڈائرکٹر نے کہا کہ رواں مرحلہ کے دوران گرج چمک اور طوفانی ہواؤں کے ساتھ بارش و ژالہ باری موسمی معمول کا حصہ ہوتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس موسمی عمل کے سبب اکثر دوپہر کے اوقات مطلع ابرآلود رہتا ہے اور شام یا رات کے اوقات طوفانی ہواؤں کے ساتھ زیادہ سے زیادہ 30تا 45منٹ بارش ہوا کرتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT