Saturday , October 21 2017
Home / Top Stories / گلبرگ قتل عام کیس : 24 پر فرد جرم

گلبرگ قتل عام کیس : 24 پر فرد جرم

بی جے پی کارپوریٹر بری، فیصلہ سے مایوسی: ذکیہ جعفری
احمدآباد 2 جون (سیاست ڈاٹ کام) گجرات فرقہ وارانہ فسادات کے دوران گلبرگ سوسائٹی میں کانگریس ایم پی احسان جعفری کے بشمول 69 افراد کے گھناؤنے ہولناک قتل عام کے 14 سال بعد یہاں خصوصی عدالت نے آج 66 کے منجملہ 24 کو مستوجب سزا قرار دیا اور ان میں سے 11 پر قتل کے الزام ہیں۔ عدالت نے البتہ تمام کے خلاف سازشی الزامات کو خارج کردیا۔ خصوصی عدالت کے جج بی پی دیسائی نے موجودہ بی جے پی کارپوریٹر بین پٹیل کے بشمول 36 دیگر ملزمین کو بری کردیا۔ تعزیرات ہند کی دفعہ 302 (قتل) کے تحت کے الزام کو برقرار رکھا اور تمام ملززین کے خلاف دفعہ B120 کے تحت سازشی الزامات کو خارج کردیا۔ مقتول کانگریس لیڈر احسان جعفری کی اہلیہ ذکیہ جعفری نے 2002 ء کے گلبرگ سوسائٹی قتل عام میں عدالت کے فیصلہ کو مایوس کن قرار دیتے ہوئے اپنی قانونی لڑائی کو جاری رکھنے کا عہد کیا۔66  ملزمین کے منجملہ 6 ملزمین کی موت مقدمہ کی سماعت کے دوران ہوچکی ہے۔ جن 24 ملزمین کو سزا دی گئی ان میں 11 پر قتل کا الزٓم ہے جبکہ وی ایچ پی لیڈر اتل ویدیا کے بشمول دیگر 13 کو معمولی جرم کے لئے سزا دی گئی ہے۔ عدالت نے کہاکہ اس کیس میں مجرمانہ سازش کا کوئی ثبوت نہیں ملتا اور عدالت نے تعزیرات ہند کی دفعہ 120B کو خارج کردیا۔ سزا کی نوعیت کا اعلان 6 جون کو کیا جائے گا۔

گلبرگ مقدمہ کا فیصلہ ، بی جے پی اور کانگریس میں لفظی تکرار

احمد آباد ۔ /2 جون (سیاست ڈاٹ کام) گلبرگ سوسائیٹی فساد مقدمہ کے فیصلے نے بی جے پی اور کانگریس کے درمیان گجرات میں زبانی تکرار کا آغاز کردیا جبکہ برسراقتدار پارٹی نے اسے وزیراعظم نریندر مودی کو بے قصور قرار دینے کا فیصلہ قرار دیا جبکہ اپوزیشن نے الزام عائد کیا کہ اس وقت کی ریاستی حکومت نے اکثریتی فرقہ کے عوام کو بھڑکایا تھا تاکہ وہ اقلیتی فرقہ کے افراد کا قتل عام کرسکیں ۔ فیصلہ کا خیرمقدم کرتے ہوئے صدر ریاستی بی جے پی وجئے روپانی نے کہا کہ یہ فیصلہ مودی اور صدر بی جے پی امیت شاہ کو بے قصور قرار دیتا ہے کیونکہ عدالت نے اس مقدمہ میں سازش کے پہلو کو تسلیم نہیں کیا ۔ اس کے برعکس کانگریس کے سینئر قائد شنکر سنہہ واگھیلا نے الزام عائد کیا کہ 2002 ء کے فسادات میں اس وقت کی بی جے پی حکومت کی ایماء پر لوگوں کا قتل عام کیا گیا ۔ مودی اور شاہ کو بے قصور قرار دیتے ہوئے عدالت نے واضح طور پر کہا ہے کہ گلبرگ سوسائیٹی مقدمہ کا کوئی سازش کا پہلو نہیں ہے ۔ بی جے پی کے ریاستی صدر روپانی نے کہا کہ یہ سب کانگریس کی جانب سے بی جے پی قائدین کو بدنام کرنے کی سازش ہے ۔ تاہم واگھیلا نے بی جے پی اور اس کے قائدین بشمول مودی پر الزام عائد کیا کہ انہوں نے فسادات بھڑکائے تھے۔

گلبرگ فیصلہ مودی پر داغ: راجندر سچر
نئی دہلی 2 جون (سیاست ڈاٹ کام) سابق دہلی ہائیکورٹ چیف جسٹس راجندر سچر نے گلبرگ ہاؤزنگ سوسائٹی مقدمہ میں گجرات عدالت کے فیصلہ کو وزیراعظم نریندر مودی پر ’’داغ‘‘ قرار دیا۔ جس وقت یہ قتل پیش آیا وہ گجرات کے چیف منسٹر تھے۔ سابق صدر پیپلز یونین فار سیول لبرٹیز نے ایک بیان میں ہندو شرپسندوں کی فرقہ پرستانہ ذہنیت پر شدید تنقید کی جو متاثرہ خاندانوں کو اُن کے مکانات منہدم ہونے کے بعد وہاں سے منتقلی سے روک رہے تھے۔ ایک قومی روزنامہ کی رپورٹ کے مطابق وڈودرا میں کپورائی علاقہ کے تقریباً 300 متاثرہ خاندان جن میں اکثریت مسلمانوں کی ہے، سلیمان چال علاقہ میں اُن کے مکانات منہدم کرنے کے بعد اُنھیں یہاں بسایا جارہا تھا لیکن مقامی افراد نے احتجاج شروع کردیا۔

TOPPOPULARRECENT