Friday , July 28 2017
Home / ہندوستان / گنگا ایکٹ دنیا کی تمام ندیوں کے تحفظ کا مثالی قانون

گنگا ایکٹ دنیا کی تمام ندیوں کے تحفظ کا مثالی قانون

یومیہ 20 لاکھ افراد کا اشنان اور صنعتی فضلہ، آلودگی کا ذمہ دار کون؟
نئی دہلی، 19 جون (سیاست ڈاٹ کام ) آبی وسائل، ندیوں کی ترقیات اور گنگا کے تحفظ کی مرکزی وزیر اوما بھارتی نے کہا ہے کہ گنگا کو آلودگی سے پاک کرنے کے لئے مجوزہ گنگا ایکٹ پوری دنیا میں ندیوں کے تحفظ کاایک مثالی قانون ثابت ہوگا۔ اوما بھارتی نے آج یہاں ا پنی وزارت کی تین سال کی کامیابیوں کی تفصیلات بتانے کے موقع پر نامہ نگاروں سے کہا کہ گنگا میں آلودگی کون پھیلاتا ہے ، اس کی ذمہ داری کا جب تک فیصلہ نہیں ہو گا اس وقت تک آلودگی ختم کرنے کی لاکھ تدبیریں کر لیں اس کا کوئی اثر نہیں ہونے والا ہے ، اسی لئے ان کی وزارت گنگا ایکٹ پر تیزی سے کام کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ گنگا میں اوسطا روزانہ 20 لاکھ لوگ نہاتے ہیں۔ سالانہ یہ اوسط 60 کروڑ تک پہنچ جاتا ہے ۔ بہت ساری ایسی صنعتی یونٹس ہیں جو رجسٹرڈ نہیں ہیں، وہ بھی صنعتی فضلات گنگا میں بہاتی ہیں۔ ایسے میں یہ طے کرنا مشکل ہے کہ آخر گنگا کو آلودہ کون کرتا ہے۔ یہ جوابدہی طے کرنے اور انہیں سزا دینے کے لئے گنگا ایکٹ لایا جا رہا ہے ۔ انھوں نے کہا کہ قانون بن جانے سے آلودگی پھیلانے والوں کے خلاف مناسب کارروائی کی جا سکے گی۔ اوما بھارتی نے کہا کہ قانون بنانے کے لئے پنڈت مدن موہن مالویہ کے پوتے سابق جسٹس گردھر مالویہ کی صدارت میں ایک کمیٹی قائم کی گئی ہے ۔ کمیٹی تمام فریقوں کی رائے کے ساتھ ہر مسئلہ کی تحقیقات کر رہی ہے ۔ پوری دنیا میں ندیوں کے تحفظ سے متعلق قوانین کا مطالعہ کیا جا رہا ہے ۔ قانون بناتے وقت ہر حساس اور انسانی پہلو پر بھی غور کیا جا رہا ہے۔ انھوں نے بتایا کہ قانون بنانے کا کام آخری مرحلے میں ہے ۔ اسے بس اب کابینہ کی منظوری کے لئے پیش کیا جانا باقی ہے ۔ یہ کام بھی جلد ہی مکمل ہو جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT