Sunday , August 20 2017
Home / ہندوستان / گوا میں خاتون دلال کی خودسپردگی ملزم رکن اسمبلی تین یوم کیلئے پولیس تحویل میں

گوا میں خاتون دلال کی خودسپردگی ملزم رکن اسمبلی تین یوم کیلئے پولیس تحویل میں

پناجی ۔ 7 مئی ۔(سیاست ڈاٹ کام) ایک خاتون دلال روزی فیرورس جس پر کانگریس سے خارج کردہ ایک رکن اسمبلی اٹامنیومون سسیرینی کو ایک 16 سالہ لڑکی فروخت کردینے کا الزام ہے آج یہاں اسٹیٹ کرائم برانچ کے روبرو خود سپردگی اختیار کرلی ہے ۔ متاثرہ لڑکی نے خاتون دلال کو آنٹی کے طورپر حوالہ دیا تھا جس کے بعد پولیس نے فیرورس کی تلاش شروع کردی تھی ۔ سابق وزیر تعلیم مون سیرینی کو ایک لڑکی خریدنے اور عصمت ریزی کے الزام میں 2 یوم قبل گرفتار کرکے پولیس تحویل میں دیدیا گیا۔ رکن اسمبلی کے جنسی استحصال کا شکار لڑکی کی والدہ کے خلاف بھی بردہ فروشی ( ہیومن ٹریفکینگ ) کیس درج کیا گیا ۔ سینئر پولیس عہدیدار نے بتایا کہ فیرورس نے آج دوپہر 12:30 بجے اپنے آپ کو قانون کے حوالے کردیا، جس سے پوچھ تاچھ کی جارہی ہے جس کے بعد اسے باقاعدہ گرفتار کرلیا جائیگا ۔ متاثرہ لڑکی نے پولیس کو یہ بیان دیا تھا کہ ماں نے اسے فروخت کردیا اور ایک خاتون سے جاریہ سال مارچ میں رکن اسمبلی مون سیرینی کو 50 لاکھ روپئے کے عوض حوالے کردیا ۔ اس معاملت میں فیرورس نے دلال کا رول ادا کیا تھا ۔ حلقہ اسمبلی سینٹ کروز کے نمائندہ مون سسیر کو کل گرفتار کرنے کے بعد جوڈیشنل مجسٹریٹ نے 3 دن کی پولیس تحویل میں بھیج دیا تھا اور  انھیں گوا کے بچوں کی عدالت میں پیر کے دن پیش کیا جائیگا ۔ تاہم رکن اسمبلی نے ان الزامات کو مسترد کردیا اور یہ ادعا کیا کہ میرماربیچ گوا میں واقعہ ان کے لائف اسٹائیل شوروم میں رقم سرقہ پر متاثرہ لڑکی کو ملازمت سے نکال دیا تھا جس نے ان کے خلاف الزامات عائد کئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT