Wednesday , August 16 2017
Home / کھیل کی خبریں / گوا کرکٹ اسوسی ایشن کے خازن اکبر ملا مستعفی

گوا کرکٹ اسوسی ایشن کے خازن اکبر ملا مستعفی

فنڈس میں خرد برد کے الزامات مسترد ، بے قصوری کا دعویٰ
پاناجی ۔ 8 جولائی ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) گوا کرکٹ اسوسی ایشن ( جی سی اے ) کے خازن اکبر ملا نے آج استعفیٰ دیدیا ۔ وہ بھی جی سی اے میں 3.13 کروڑ روپئے مالیتی فنڈس کے مبینہ تغلب میں ملوث تین ملزمین میں شامل ہیں۔ گوا کی مقامی پولیس کے شعبہ انسداد معاشی جرائم نے جی سی اے کے صدر چیتن دیسائی ، سکریٹری ونود پھڈکے اور خازن اکبر ملا کو 15 جون کو گرفتار کیا تھا جن کے خلاف یہ بی سی سی آئی کی طرف سے جی سی اے کو دیا گیا ایک چیک پر رقم نکالنے کی شکایت کی گئی تھی ۔ بعد ازاں ان تینوں کیلئے ضمانت منظور کی گئی تھی ۔ ان پر 2006 ء اور 2008 ء کے دوران 3.13 کروڑ روپئے مالیتی فنڈس میں ہیرپھیر کا الزام ہے ۔ اکبر ملا نے استعفیٰ پیش کرتے ہوئے کہا کہ تحقیقات کی تکمیل تک وہ اس عہدہ پر فائم رہنا نہیں چاہتے ۔ بی سی اے کے صدر کے نام اپنے مکتوب مورخہ 6 جولائی کو انھوں نے لکھا ہے کہ ’’میرے خلاف عائد ہیرپھیر کے الزامات کے پیش نظر مناسب تحقیقات کی ضرورت ہے اور اخلاقی طورپر میں یہ محسوس کرتا ہوں کہ تحقیقات جاری رہنے تک مجھے اس عہدہ پر فائز نہیں رہنا چاہئے ‘‘ ۔ اکبر ملا نے اپنی بے قصوری ثابت کرنے کیلئے بینک کھاتہ کی تفصیلات ، شخصی شناختی ثبوت اور دیگر کئی متعلقہ دستاویزات کی نقل بھی میڈیا کو پیش کیا۔ انھوں نے کہا کہ 2007 ء میں ڈیولپمنٹ کریڈٹ بینک ( ڈی سی بی ) میں جب بینک کھاتہ کھولا گیا تھا اُس وقت میں جی سی اے کا خازن نہیں بلکہ صرف ایک رکن تھا ۔ انھوں نے کہاکہ ’’برطانیہ کے سرکاری دورہ کے لئے میں نے اپنا پاسپورٹ داخل کیا تھا جو جی سی اے کے پاس ہی تھا اور غالباً اُسی وقت کھاتہ کھولا گیا۔ اکبر ملا نے کہا کہ 12اپریل 2007ء کو کھاتہ کھولا گیا تھااور 27 اپریل کو 2007 ء کو برطانیہ کا ویزا لگایا گیا تھا ۔ اکبر ملا نے استدلال پیش کیا کہ بنک نے داخل کردہ دستاویزات سے میری شخصی تفصیلات اور شناخت کی تنقیح اور توثیق نہیں کی تھی ۔ انھوں نے الزام عائد کیا کہ متعلقہ بینک کی منیجر للیتا کاکوڈ کر بھی اس دھوکہ دہی میں ملوث ہیں۔

TOPPOPULARRECENT