Monday , August 21 2017
Home / سیاسیات / گورنر اترپردیش پر اعظم خان کی تنقید

گورنر اترپردیش پر اعظم خان کی تنقید

میئرس کے اختیارات میں کٹوتی ، بل کی منظوری میں رکاوٹ کا الزام
رامپور ۔ 7 مئی (سیاست ڈاٹ کام) اترپردیش کے وزیر محمد اعظم خان نے آج پھر ایکبار ریاستی گورنر کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے ۔ جنہوں نے حال ہی میں میئرس کے اختیارات کی کٹوتی سے متعلق ایک بل صدرجمہوریہ پرنب مکرجی سے رجوع کیا ہے اور یہ الزام عائد کیا ۔ عوامی فیصلہ کو پامال کرنے کی کوشش سے ریاستی حکومت نے 60 سالہ قدیم ایکٹ میں ترمیم کیلئے ایڑی چوٹی کا زور لگارہی ہے ۔ کیونکہ یہ ایکٹ کارپوریشن کے میئرس کے خلاف ان کے غلط کاموں پر کارروائی کی اجازت نہیں دیتا ۔ مسٹر اعظم خاں نے کہا کہ بدعنوان میئرس کے خلاف کارروائی کیلئے ریاستی حکومت کے پاس کوئی اختیار ہی نہیں ہے اور یہ  جمہوریت کے ساتھ ایک مذاق ہے اور گورنر کی جانب سے ایکٹ میں ترمیم کی مخالفت سے کرپشن کی حوصلہ افزائی ہوگی ۔ قبل ازیں راج بھون کے ذرائع نے جمعرات کے دن ایک اعلامیہ میں بتایا ہے کہ گورنر نے اترپردیش نگر نگم (مرممہ) بل 2015 ء اور اترپردیش نگرپالیکا ویدھی (مرممہ) بل 2015 ء کو بطور ریفرنس صدرجمہوریہ سے رجوع کردیا ہے ۔ دونوں بلز کا جائزہ لینے کے بعد گورنر نے خیال ظاہر کیا کہ مجالس مقامی اور جمہوریت کے تصور کیلئے اس کے بعض دفعات متضاد ہیں ۔ جس پر اعظم خان کا کہنا ہے کہ بددیانت میئرس کے خلاف کارروائی کو روکنے کیلئے مذکورہ بلز کی منظوری (توثیق) نہیں دی جارہی ہے ۔ انہوں نے یہ بھی الزام عائد کیا تھا کہ گورنر متعدد بلز کو منظوری سے انکار کررہے ہیں جس پر یہ تاثر ملتا ہے کہ رام نائیک پارٹی کے زیراثر کام کررہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT