Tuesday , April 25 2017
Home / شہر کی خبریں / گورنر کا خطبہ حقائق سے بعید

گورنر کا خطبہ حقائق سے بعید

ریاست میں بے شمار مسائل حل طلب، پی سدھاکر ریڈی کانگریس ایم ایل سی کا بیان
حیدرآباد ۔ 11 مارچ (سیاست نیوز) کانگریس کے رکن قانون ساز کونسل پی سدھاکر ریڈی نے گورنر کے خطبہ کو حقائق سے بعید قرار دیتے ہوئے جھوٹ پر مبنی ہونے کا دعویٰ کیا۔ کانگریس کے واک آوٹ کرنے کی وجوہات پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ زرعی شعبہ بحران کا شکار ہے۔ کسانوں کی خودکشی میں تلنگانہ کو سارے ملک میں دوسرا مقام حاصل ہے۔ خشک سالی سے نمٹنے کیلئے حکومت کے پاس کوئی منصوبہ نہیں ہے۔ ایس سی ایس ٹی سب پلان میں 7 ہزار کروڑ روپئے کا بیجا استعمال کیا گیا۔ کسانوں کو اپنی تیار کردہ کاشت پر اقل ترین قیمت حاصل نہ ہونے کا دعویٰ کیا۔ ڈبل بیڈ روم مکانات کے تعمیرات، مسلمانوں اور قبائیلی طبقہ کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے کا وعدہ پورا نہیں کیا گیا۔ ڈبل بیڈروم مکانات کا وعدہ پورا نہیں کیا گیا۔ اندراماں مکانات کے فنڈزا بھی تک جاری نہیں کئے گئے۔ کروڑہا روپئے کی پبلسٹی کرتے ہوئے سرکاری خزانے کو لٹایا جارہا ہے۔ گورنر کے خطبہ میں عوامی مسائل کا کوئی تذکرہ نہیں کیا گیا جس پر بطور احتجاج کانگریس نے واک آوٹ کیا جو حق بجانب ہے۔ شرح گھریلو پیداوار کے معاملے میں اعدادوشمار کو الٹ پھیر کیا گیا۔ حاملہ خواتین کی اموات واقع ہورہی ہے۔ سوائن فلو کی اموات میں اضافہ ہوگیا ہے۔ تعلیمی شعبہ میں ہونے والی بے قاعدگیوں کو منظم سازش کے تحت نظرانداز کیا گیا۔ مناسب سہولتیں فراہم نہ ہونے کی وجہ سے تقریباً 100 ہاسپٹلس بند ہونے کے قریب ہے۔ چیف منسٹر کے سی آر جھوٹے وعدے کرتے ہوئے عوام کے کان میں پھول لگانے کی کوشش کررہے ہیں مگر ٹی آر ایس کو اس کا خمیازہ بھگتنا پڑے گا۔ آبپاشی پراجکٹس پر سے آنجہانی اندرا گاندھی اور راجیو گاندھی کے نام ہٹادیئے گئے۔ ٹی آر ایس من مانی کررہی ہے۔ حکومت فوری بی سی اور مائناریٹی سب پلان کا اعلان کرے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT