Sunday , May 28 2017
Home / شہر کی خبریں / گورنر کے خطبہ کے بائیکاٹ کی مدافعت : محمدعلی شبیر،تلنگانہ قانون ساز کونسل میں قائد اپوزیشن اور چیف وہپ کے درمیان ٹھن گئی

گورنر کے خطبہ کے بائیکاٹ کی مدافعت : محمدعلی شبیر،تلنگانہ قانون ساز کونسل میں قائد اپوزیشن اور چیف وہپ کے درمیان ٹھن گئی

حیدرآباد 11 مارچ (سیاست نیوز) قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل محمد علی شبیر نے گورنر کے خطبہ کا بائیکاٹ کرنے کی مدافعت کرتے ہوئے ٹی آر ایس کے کانگریس پر لگائے گئے الزامات کی مذمت کرتے ہوئے کہاکہ اسی گورنر کی ٹی آر ایس کے ارکان اسمبلی نے توہین کی تھی۔ خطبہ کی کاپی پھاڑ کر ان پر پھینکا گیا تھا۔ آج کونسل میں گورنر کے خطبہ کو لے کر محمد علی شبیر اور چیف وہپ کونسل سدھاکر ریڈی میں ٹھن گئی۔ ٹی آر ایس کے ارکان قانون ساز کونسل نے گورنر کے خطبہ پر اظہار تشکر مباحث میں خطبہ کا بائیکاٹ کرتے ہوئے گورنر کی توہین کرنے کا کانگریس پر الزام عائد کیا جس پر قائد اپوزیشن محمد علی شبیر نے کہاکہ گورنر کے بارے میں بات کرنے کا ٹی آر ایس کے ارکان اسمبلی کو اخلاقی حق بھی نہیں ہے۔ کانگریس کے دور حکومت میں ٹی آر ایس کے ارکان اسمبلی نے اسی گورنر (نرسمہن) پر خطبہ کی کاپی پھاڑ کر ان پر پھینک مارا تھا۔ محمد علی شبیر کے ان ریمارکس پر حکمراں جماعت کے ارکان چراغ پا ہوگئے اور سب اپنی نشست سے اُٹھ کر احتجاج کرنے لگے۔ صدرنشین کونسل سوامی گوڑ نے گورنر کے خطبہ کی کاپی پھاڑ کر پھینک مارنے کے الفاظ کو ریکارڈ سے حذف کرنے کا اعلان کیا جس پر قائد اپوزیشن نے کہاکہ کونسل کے ریکارڈ سے ان کے الفاظ کو حذف کیا جاسکتا ہے مگر اسمبلی میں جو ریکارڈ موجود ہے اس سے انحراف نہیں کیا جاسکتا۔ ٹی آر ایس کے ارکان اسمبلی نے اُس وقت گورنر کے خطبہ کے دوران بنچوں پر کھڑے ہوکر احتجاج کیا اور گورنر کے خطبہ کی کاپی پھاڑ دی تھی۔ اسمبلی میں ریکارڈ موجود ہے۔ گورنمنٹ چیف وہپ سدھاکر ریڈی ایک موقع پر محمد علی شبیر سے اُلجھ پڑے۔ اس کے علاوہ محمد علی شبیر نے گورنر خطبہ کے اظہار تشکر مباحث میں آفیسرس گیالری خالی رہنے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے چیف وہپ کو مشورہ دیا کہ وہ آفیسرس کی موجودگی کو یقینی بناتے ہوئے گورنر کے خطبہ کا احترام کریں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT