Monday , September 25 2017
Home / ہندوستان / گورکھا جن مکتی مورچہ کی حکومت مغربی بنگال سے اپیل

گورکھا جن مکتی مورچہ کی حکومت مغربی بنگال سے اپیل

دارجلنگ (مغربی بنگال) 21 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) گورکھا جن مکتی مورچہ آج مرکز اور حکومت مغربی بنگال سے درخواست کی کہ جلد از جلد دارجلنگ میں غیر معینہ مدت کی ہڑتال کے خاتمے کے لئے اور دارجلنگ میں امن بحال کرنے کے لئے امن مذاکرات کا آغاز کیا جائے۔ غیر معینہ مدت کی ہڑتال آج 68 ویں دن میں داخل ہوگئی۔ یہ پہلی بار ہے جبکہ مورچہ کسی احتجاج کی علیحدہ ریاست گورکھا لینڈ کے لئے قیادت کررہا ہے۔ اُس نے آمادگی ظاہر کی ہے کہ ریاستی حکومت سے اور مرکزی حکومت سے امن کی بحالی کے لئے مذاکرات کا آغاز کیا جائے گا تاکہ دارجلنگ، ترائی اور دوارس میں امن کا قیام یقینی بنایا جاسکے۔ لیکن مرکزی حکومت اور حکومت مغربی بنگال کو بھی جلد از جلد امن مذاکرات کے لئے پہل کرنی چاہئے تاکہ معمول کے حالات بحال کئے جاسکیں۔ پارٹی کے موقف میں مکمل تبدیلی مورچہ کے صدر بمل گرنگ کے خلاف غیرقانونی سرگرمیاں (انسداد) قانون کے تحت مقدمہ درج کرنے کے بعد منظر عام پر آئی ہے۔ گورکھا جن مکتی مورچہ گزشتہ دو ماہ سے احتجاج میں مصروف ہے اور اس نے امن مذاکرات کے لئے ریاستی حکومت کے ساتھ ایک ہی میز پر بیٹھنے سے بار بار انکار کیا ہے اور الزام عائد کیا ہے کہ ریاستی حکومت پہاڑی علاقوں میں دہشت پھیلانا چاہتی ہے۔ ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ کے نقطہ نظر کا اعادہ کرتے ہوئے ٹی ایم سی کے سینئر قائد اور وزیر گوتم دیب نے کہاکہ ہم قبل ازیں کل جماعتی اجلاس طلب کرچکے ہیں لیکن گورکھا جن مکتی مورچہ نے شرکت نہیں کی تھی۔

TOPPOPULARRECENT