Thursday , September 21 2017
Home / ہندوستان / گورکھپور سانحہ کے بعد کانگریس کارروائی کے موڈ میں

گورکھپور سانحہ کے بعد کانگریس کارروائی کے موڈ میں

راہول گاندھی کی ریاستی اور مرکزی بی جے پی حکومتوں پر تنقید ، عوامی فلاح کا ادعا
لکھنو ۔ 22 اگسٹ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) اپنے آپ کو یوپی میں بالاتر رکھنے کی کوشش کرتے ہوئے جبکہ اسمبلی انتخابات کے پیش نظر مبینہ گورکھپور ہاسپٹل میں آکسیجن کی قلت کے مسئلے نے کانگریس کو متحد کردیا ہے ۔ کانگریس نے اس موقع سے فائدہ اُٹھاتے ہوئے پہلی اپوزیشن پارٹی بن گئی ہے جو آئندہ کے لئے بی آر ڈی میڈیکل کالج ہاسپٹل میں بچوں کی اموات ذرائع ابلاغ کی شہہ سرخیوں میں آنے سے فائدہ اُٹھارہی ہے ۔ اچانک کانگریس کیمپ میں یہ خبر گرم ہے ، تاہم برسراقتدار پارٹی اس سلسلے میں خاموش ہے ۔ چیف منسٹر یوگی آدتیہ ناتھ کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی پر تنقید کرتے ہوئے کہہ رہے ہیں کہ ’’یوراج دہلی میں ہیں ، مشرقی یوپی کے ایک قصبہ کو ’’تفریحی مقام ‘‘ سمجھ رہے ہیں‘‘۔ تاہم یہ واضح کردیا گیا ہے کہ کانگریس پارٹی یہ مسئلہ انتخابات کو ذہن میں رکھتے ہوئے نہی اُٹھارہی ہے ۔ کانگریس کے ترجمان دوجیندر ترپاٹھی نے اخباری نمائندوں سے کہا کہ وہ اس مسئلہ کو جو گورکھپور پر غلبہ حاصل کئے ہوئے ہے اور کئی برسوں سے مضافاتی علاقوں پر چھایا ہوا ہے انتخابات کو ذہن میں رکھتے ہوئے نہیں اُٹھارہے ہیں۔ کانگریس معصوم بچوں کے موت کے سانحہ سے سیاسی فائدہ اُٹھانے کی نہیں سوچ رہی ہے۔ وہ صرف مصائب زدہ افراد کو آواز عطا کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ ساتھ ہی ساتھ حکومت کو گہری نیند سے جگانا چاہتی ہے ۔ کانگریس قانون ساز پارٹی کے قائد اجئے کمار للو نے کہا کہ اُن کی پارٹی یقینا عوامی اہمیت اختیار کرے گی اور نہ یہ سب اس مقصد سے کیا جارہاہے ۔ کانگریس کا مقصد صرف عوام کی فلاح و بہبود ہے ۔ ہم چاہتے ہیں کہ مرض پر موثر قابو پایا جائے ۔ اس بات کو یقینی بنانے کیلئے ایسے سانحوں کا اعادہ نہ ہو ، انتظامات یقینی بنائے جانے چاہئے ۔ للو خود کاشی نگر علاقہ کے ایک متاثرہ خاندان سے تعلق رکھتے ہیں ۔ یہ سانحہ جنگل کی آگ کی طرح پھیل گیا۔ پارٹی کی اعلیٰ سطحی قیادت نے بی جے پی حکومت پر تنقید کرنے میں کوئی وقت ضائع نہیں کیا ۔ ریاستی اور مرکزی حکومتیں اُس کی تنقیدوں کا نشانہ بن گئیں۔ راہول گاندھی گورکھپور پہونچ گئے تاکہ مہلوکین کے ارکان خاندان سے ملاقات کرسکیں۔ اُنھوں نے اس واقعہ کو حکومتی سانحہ قرار دیتے ہوئے اس حملے کی قیادت سنبھالنے کی کوشش کی ۔ چیف منسٹر کو اس کی پردہ پوشی نہ کرنے کا مشورہ دیا ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT