Wednesday , September 20 2017
Home / سیاسیات / گوری لنکیش قتل ‘ راہول آر ایس ایس کے خلاف ثبوت پیش کریں

گوری لنکیش قتل ‘ راہول آر ایس ایس کے خلاف ثبوت پیش کریں

حکومت کرناٹک لا اینڈ آرڈر کی برقراری میں ناکام ۔ بی جے پی لیڈر ایڈورپا کا الزام
بنگلورو 11 ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) کرناٹک بی جے پی نے آج کہا کہ اگر کانگریس کے نائب صدر راہول گاندھی جہد کار صحافی گوری لنکیش کے قتل کیلئے دائیں بازو کے نظریات اور آر ایس ایس کو ذمہ دار قرار دیتے ہیں تو انہیں اس کا ثبوت بھی پیش کرنا چاہئے ۔ گوری لنکیش کے قتل کے ایک دن بعد راہول گاندھی نے کہا تھا کہ جو کوئی بھی بی جے پی اور آر ایس ایس کے نظریات کے خلاف اظہار خیال کرتا ہے اس پر دباؤ ڈالا جا رہا ہے ‘ اسے پیٹا جا رہا ہے اور یہاں تک کہ اسے قتل بھی کیا جا رہا ہے ۔ ریاستی بی جے پی کے صدر بی ایس ایڈورپا نے کہا کہ اگر راہول گاندھی کے پاس اپنے الزامات کی تائید میں کوئی ثبوت ہے تو انہیں اسے پیش کرنا چاہئے ۔ ایڈورپا اور مرکزی وزیر روی شنکر پرساد نے 8 ستمبر کو بھی راہول گاندھی پر تنقید کی تھی کہ وہ گوری لنکیش کے قتل کیلئے دائیں بازو کی تنظیموں اور آر ایس ایس کو ذمہ دار قرار دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی ‘ چیف منسٹر کرناٹک مسٹر سدارامیا سے یہ سوال کرنا چاہتی ہے کہ آیا راہول گاندھی کے یکطرفہ ریمارکس اور تبصرہ کے بعد کیا اب مقدمہ میں غیر جانبدارانہ تحقیقات کی امید کی جاسکتی ہے ۔ ریاستی حکومت نے گوری لنکیش کے قتل کے سلسلہ میں ایک خصوصی تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی ہے ۔ ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے ایڈورپا نے اخباری نمائندوں سے کہا کہ پہلے تمام تحقیقات مکمل ہونی چاہئیں۔ اور جو کوئی بھی اس قتل کے ذمہ دار ہیں انہیں پھانسی دی جانی چاہئے ۔ اس میں بی جے پی کو کوئی اعتراض نہیں ہے ۔ اس سوال پر کہ آیا بی جے پی جاریہ تحقیقات سے مطمئن ہے یا پھر وہ اس معاملہ کی سی بی آئی تحقیقات کا مطالبہ کریگی ایڈورپا نے کہا کہ اس تعلق سے کوئی بھی فیصلہ کرنا ریاستی حکومت کا کام ہے ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ ریاست میں کانگریس حکومت لا اینڈ آرڈر کی برقراری میں ناکام ہوگئی ہے اسی کا نتیجہ ہے کہ ریاست میں آر ایس ایس ‘ بی جے پی کارکنوں ‘ بائیں بازو کے دانشوروں اور ایک صحافی کا قتل کردیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کم از کم گوری لنکیش کے قتل میں حکومت کو چاہئے کہ وہ مناسب کارروائی کرے اور خاطیوں کو کیفر کردار تک پہونچایا جائے ۔ گوری لنکیش ایک جہد کار صحافی تھیں اور وہ اپنے دائیں بازو کے نظریات کیلئے شہرت رکھتی ہیں۔ وہ حکومت اور دائیں بازو کی تنظیموں اور ان کے نظریات کی مخالف تھیں ۔ گوری لنکیش کو 5 ستمبر کو بنگلورو میں ان کے گھر کے باہر نا معلوم بندوق برداروں نے انتہائی قریب سے گولی مار کر ہلاک کردیا تھا ۔ اس قتل کے بعد سے دائیں بازو کی تنظیموں پر مسلسل تنقیدیں ہو رہی ہیں اور ملک بھر میں مختلف شہروں میں صحافتی تنظیموں کی جانب سے بڑے پیمانے پر احتجاج منظم کرتے ہوئے گوری لنکیش کے قاتلوں کے خلاف کارروائی کرنے اور انہیں پھانسی کی سزا دینے کا مطالبہ کیا جا رہا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT