Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / گٹلہ بیگم پیٹ کی وقف اراضی پر قبضوں کو برخاست کروانے کی مساعی

گٹلہ بیگم پیٹ کی وقف اراضی پر قبضوں کو برخاست کروانے کی مساعی

وقف بورڈ کا پولیس اور ریوینو حکام سے حصول تعاون کا فیصلہ ، سی ای او کا دورہ بیگم پیٹ
حیدرآباد۔/24مارچ، ( سیاست نیوز) گٹلہ بیگم پیٹ میں اوقافی اراضی پر ناجائز قبضوں کو روکنے کیلئے وقف بورڈ نے پولیس اور ریونیو حکام سے تعاون حاصل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس کے علاوہ سپریم کورٹ میں جاری مقدمہ کی عاجلانہ یکسوئی کیلئے مساعی کی جائے گی تاکہ 90ایکر 18گنٹے قیمتی اراضی کا تحفظ ہوسکے۔ چیف ایکزیکیٹو آفیسر محمد اسد اللہ نے آج عہدیداروں کے ہمراہ گٹلہ بیگم پیٹ کا دورہ کیا اور ایک خانگی کنسٹرکشن کمپنی کی جانب سے شروع کی گئی تعمیرات کا معائنہ کیا۔ انہوں نے اوقافی اراضی پر تعمیرات کے آغاز اور باؤنڈری والس کی تعمیر پر اعتراض کرتے ہوئے واضح کیا کہ سپریم کورٹ کے فیصلہ کے مطابق اراضی کے بارے میں جوں کا توں موقف رکھا جانا چاہیئے لیکن خانگی کنسٹرکشن کمپنی سپریم کورٹ کے احکامات کی خلاف ورزی کررہی ہے۔ مقامی افراد اور مسجد کمیٹی نے بھی اس بات کی شکایت کی کہ کمپنی مسجد کے اطراف موجود وقف اراضی کو منصوبہ بند انداز میں گھیر رہی ہے اگر فوری کارروائی نہیں کی گئی تو پولیس کی مدد سے تعمیری کام میں تیزی کا اندیشہ ہے۔ چیف ایکزیکیٹو آفیسر نے بتایا کہ خانگی کنسٹرکشن کمپنی نے مسجد کی تعمیر کی آڑ میں اپنی تعمیرات کے آغاز کی کوشش کی ہے۔3 تا 4ایکر اوقافی اراضی مذکورہ کمپنی کی تحویل میں ہے۔ اس کے علاوہ بعض سیاسی قائدین کی سرپرستی سے اراضی پر جھونپڑیوں کی تعمیر کا کام جاری ہے۔ محمد اسد اللہ نے متعلقہ آر ڈی او سے بات چیت کی اور انہیں اراضی کے سروے کا مشورہ دیا۔ آر ڈی او نے تیقن دیا کہ وہ متعلقہ ایم آر او کے ساتھ اراضی کا معائنہ کریں گے۔ بتایا جاتا ہے کہ مذکورہ اوقافی اراضی پر ناجائز قبضوں کیلئے بعض مقامی افراد بھی ذمہ دار ہیں جن کی اندرونی طور پر خانگی کمپنیوں سے ملی بھگت ہے۔ دوبارہ تعمیری کاموں کے آغاز کی صورت میں پولیس میں شکایت درج کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ چیف ایکزیکیٹو آفیسر نے بورڈ کے عہدیداروں کے ساتھ اجلاس منعقد کرتے ہوئے گٹلہ بیگم پیٹ کی اوقافی اراضی سے متعلق فائیلوں اور سپریم کورٹ کے مقدمہ کی پیشرفت کا بھی جائزہ لیا۔ واضح رہے کہ شہر اور اضلاع میں اوقافی اراضی پر قبضوں سے متعلق کسی بھی شکایت پر چیف ایکزیکیٹو آفیسر فوری کارروائی کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT