Sunday , September 24 2017
Home / Top Stories / گڈس اینڈ سرویس ٹیکس بل کی منظوری کیلئے کانگریس کی مشروط تائید

گڈس اینڈ سرویس ٹیکس بل کی منظوری کیلئے کانگریس کی مشروط تائید

4اہم ترامیم حکومت کو پیش، سینئر پارٹی لیڈر جئے رام رمیش کا بیان

لکھنؤ۔/25اگسٹ، ( سیاست ڈاٹ کام ) یہ ادعا کرتے ہوئے کہ ان کی پارٹی گڈس اینڈ سرویس ٹیکس بل کے خلاف نہیں ہے سینئر کانگریس لیڈر جئے رام رمیش نے آج بتایا ہے کہ ان کی پارٹی نے 4ترامیم پیش کی ہے، اسے شامل کرلیا گیا تو راجیہ سبھا میں یہ بل بہ آسانی منظور کرلیا جاسکتا ہے۔ مسٹر جئے رام رمیش نے آج میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ سال 2011ء میں بھی جی ایس ٹی قوم کے مفاد میں تھا اور اسوقت جب پارلیمنٹ میں پیش کیا گیا تھا لیکن بی جے پی نے صرف ایک شخص کیلئے اس بل کی مخالفت کی تھی جو کہ چیف منسٹر گجرات نریندر مودی تھے اور آج وہی شخص جی ایس ٹی کی اہمیت پر درس دے رہا ہے کیونکہ وہ نہیں چاہتے تھے کہ اس کا سہرا کانگریس کے سر باندھا جائے۔ انہوں نے بتایا کہ جی ایس ٹی بل کی موجودہ شکل میں متعدد خامیاں پائی جاتی ہیں۔ کانگریس لیڈر نے ان کی پارٹی کی ترامیم کا خلاصہ پیش کرتے ہوئے بتایا کہ مجوزہ بل میں شرح محصول کا تعین، نگر پالیکاؤں اور پنچایتوں کیلئے معاوضہ اور ایک آزادانہ تنازعات کی یکسوئی کا نظام شامل کرنا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو کانگریس کی ترامیم سے کردیا گیا ہے لیکن اب تک ان ترامیم پر اتفاق نہیں کیا گیا اگرچیکہ گڈس اینڈ سرویس ٹیکس کو بہتر اور آسان بنانے کی ضرورت ہے

لیکن مودی اور ارون جیٹلی کا ٹیکس نہ تو گُڈ ( اچھا ) اور نہ ہی سمپل ( آسان ) ہے۔ یہ اعتراف کرتے ہوئے کہ سال 2011 میں پیشرو کانگریس حکومت کے تیار کردہ بل میں پارٹی نے ترامیم پیش نہیں کئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی نے بعد ازاں بعض حقائق سے آگہی کے بعد مزید دو ترامیم پیش کئے ہیں۔ تحویل اراضی بل پر تبصرہ کرتے ہوئے مسٹر جئے رام رمیش نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں کے دباؤ میں آکر حکومت نے 9میں 6اہم ترامیم سے دستبرداری اختیار کرلی ہے جو کہ سال 2013 کے ایکٹ میں شامل تھے اور اس پر اتفاق رائے حاصل کیا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ 2013ء کے ایکٹ میں حکومت نے آرڈیننس کے ذریعہ 15ترامیم شامل کئے ہیں جس کا مطالبہ کانگریس نے کیا تھا۔ کانگریس لیڈر نے کہا کہ مزید3نکات پر اختلاف پایا جاتا ہے جس پر پارلیمنٹ کی مشترکہ کمیٹی تشکیل دی گئی ہے لیکن وہ اپنی رپورٹ پیش کرنے سے قاصر ہے۔ایک سوال کے جواب میں مسٹر جئے رام رمیش نے کہا کہ یہ افسوسناک امر ہے کہ جی ایس ٹی بل پر رسمی یا غیر رسمی تبادلہ خیال کیلئے حکومت نے رابطہ قائم نہیں کیا ۔ اگر اتفاق رائے پایا گیا تو GST بل بہ آسانی منظور کرلیا جاسکتا ہے لیکن حکومت پر اس کی ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT