Friday , September 22 2017
Home / دنیا / گھانا کی معیشت مستحکم کرنے ہندوستانی برادری کے رول کی ستائش

گھانا کی معیشت مستحکم کرنے ہندوستانی برادری کے رول کی ستائش

اقوام متحدہ عالمی بینک اور آئی ایم ایف جیسے اداروں میں اصلاحات کی ضرورت، صدرجمہوریہ پرنب مکرجی کا خطاب
عکرہ ۔ 14 جون (سیاست ڈاٹ کام) اب جبکہ صدرجمہوریہ پرنب مکرجی نے تین افریقی ممالک گھانا، آئیوری کوسٹ اور نمیبیا کا دورہ کیا ہے، وزیراعظم نریندر مودی چند افریقی ممالک کے دورہ پر روانہ ہوں گے۔ یہ اشارے اس وقت ملے جب صدرجمہوریہ نے یہاں موجود ہندوستانی برادری کے ایک مجمع سے خطاب کیا جو صدرجمہوریہ کے اعزاز میں ترتیب دیئے ایک استقبالیہ کا حصہ تھا جس کی میزبانی ہندوستانی ہائی کمشنر متعینہ گھانا جیواساگر نے کی تھی۔ صدرجمہوریہ نے اپنے خطاب میں ہند ۔ افریقی قدیم تعلقات کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ گذرتے دن، ماہ و سال کے ساتھ اس میں مزید استحکام پیدا ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تین افریقی ممالک کو ان کا دورہ کوئی حادثاتی واقعہ یا  اچانک رونما ہونے والی بات نہیں ہے بلکہ یہ اسی سلسلہ کی ایک کڑی ہے جب وزیراعظم نریندر مودی نے گذشتہ سال نئی دہلی میں انڈیا۔ افریقہ فورم اجلاس کا انعقاد کروانے میں اہم رول ادا کیا تھا۔ کچھ روز قبل ہی نائب صدرجمہوریہ حامد انصاری نے تیونیشیا اور مراقش کا دورہ کیا تھا اور میں بحیثیت صدرجمہوریہ ہند تین ملکی دورہ کررہا ہوں

جس کے بعد وزیراعظم نریندر مودی کے دورہ کی باری ہے جس کے ذریعہ ہم یہ پیغام دینا چاہتے ہیں کہ ’’افریقہ، ہم تمہارے ساتھ ہیں‘‘۔ ہندوستانی برادری سے اپنے خطاب کے دوران انہوں نے ان پر زور دیا کہ وزیراعظم نریندر مودی کے ذریعہ لانچ کی گئی مہمات جیسے ڈیجیٹیل انڈیا، اسٹارٹ اپ انڈیا، اسٹینڈ اپ انڈیا، کلین انڈیا مشن اور اسمارٹ سٹیز میںان کے ساتھ شامل ہوجائیں۔ اپنی بات جاری رکھتے ہوئے انہوں نے کہا ہندوستان اور افریقہ کے درمیان تجارت کا سالانہ تخمینہ زائد از 70 بلین ڈالرس ہے جبکہ سرمایہ کاری کا تخمینہ 35 بلین ڈالرس ہے۔ متعدد پراجکٹس کیلئے حکومت ہند نے گھانا کو خصوصی مراعات دیئے ہیں جن کا تخمینہ 400 ملین ڈالرس ہے۔ ایگزم بینک ایک ریلوے پراجکٹ کیلئے فنڈس فراہم کررہی ہے۔ ہندوستان اور گھانا کے ساتھ تجارت کا تخمینہ اب سالانہ طور پر تین بلین اور سرمایہ کاری کا تخمینہ ایک بلین ڈالر ہوچکا ہے۔ گھانا کے صدر جان ڈریمانی مہاما کے ساتھ بات چیت کے دوران کہا کہ اب دونوں ممالک نے اس بات پر اتفاق کرلیا  ہے کہ 2020ء تک دونوں ممالک کی تجارت کا تخمینہ کم سے کم پانچ بلین ڈالرس ہونا چاہئے۔

انہوں نے ہندوستانی برادری کو مبارکباد دی کہ وہ گھانا کی معیشت کو مستحکم کرنے کیلئے اپنی ذمہ داری بخوبی نبھا رہے ہیں کیونکہ ہندوستانی برادری کے تعاون کے بغیر ہند ۔ افریقہ تعلقات کو اس قدر استحکام حاصل ہونا ناممکن نہیں تو مشکل ضرور تھا لہٰذا میں ہندوستانی برادری کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتا ہوں کہ انہوں نے دنیا کے ہر گوشے میں اپنی موجودگی کا احساس دلایا ہے۔ گھانا جیسے ملک کی معیشت کو استحکام پہنچانے سے اس ملک کو بھی بین الاقوامی سطح پر ایک نئی شناخت حاصل ہوگی ورنہ آج بھی ایسے لوگ موجود ہیں جنہیں افریقی ملک گھانا کے بارے میں کچھ بھی نہیں معلوم۔ وہ یہ تک نہیں جانتے کہ گھانا نام کا کوئی ملک ہے بھی یا نہیں۔ مجھے امید ہیکہ وزیراعظم نریندر مودی کے دیگر افریقی ممالک کے دورہ کے بعد اس خطہ میں ہند ۔ افریقہ تعلقات کی ایک نئی تاریخ رقم کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ مملکتوں کی معیشتوں کو قدیم اور روایتی طریقوں سے ترقی نہیں دی جاسکتی اور کہا کہ آج عالمی سطح کی تنظیموں جیسے اقوام متحدہ، عالمی بینک اور بین الاقوامی مانیٹری فنڈس میں اصلاحات متعارف کروانے کی اشد ضرورت ہے۔

TOPPOPULARRECENT