Monday , October 23 2017
Home / سیاسیات / گہلوت بیان واپس لیں ،ورنہ احمد پٹیل کو ووٹ نہیں دوں گا – واگھیلا

گہلوت بیان واپس لیں ،ورنہ احمد پٹیل کو ووٹ نہیں دوں گا – واگھیلا

گاندھی نگر، 26 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) اپنی سالگرہ کے موقع پر گزشتہ 21 جولائی کو کانگریس سے استعفی دینے کا اعلان کرنے والے شنکر سنگھ واگھیلا نے آج گجرات کے کانگریس انچارج اور راجستھان کے سابق وزیر اعلی اشوک گہلوت پر طنز کرتے ہوئے خبردار کیا کہ اگر انہوں نے ان کے سی بی آئی اور آئی ڈی کے دباؤ میں پارٹی مخالف کام کرنے کے بارے میں دیا گیا بیان واپس نہیں لیا تو وہ راجیہ سبھا کے لئے نامزدگی کرنے والے کانگریس کے امیدوار اور پارٹی صدر سونیا گاندھی کے سیاسی مشیر احمد پٹیل کو ووٹ نہیں دیں گے ۔مسٹر واگھیلا نے آج یہاں پریس کانفرنس میں مسٹر گہلوت پر گجرات کے لئے بیرونی ہونے کا بھی بالواسطہ الزام لگاتے ہوئے انہیں ریاست کی ووٹر لسٹ میں اپنا نام شامل کرانے کی بھی صلاح دی۔انہوں نے کہا کہ مسٹر گہلوت نے ان کے بارے میں کردار کشی کرنے والے بیان دیئے ہیں جو ٹھیک نہیں ہیں۔ وہ اب بھی ممبر اسمبلی ہیں اور مسٹر پٹیل کو ووٹ دینا چاہتے ہیں لیکن اگر مسٹر گہلوت نے اپنا بیان واپس نہیں لیا تو وہ الیکشن سے پہلے ہی ایم ایل اے کے عہدے سے بھی استعفی دے دیں گے ۔ واضح رہے کہ مسٹر پٹیل نے آج ہی اپنا اندراج کیا ہے ۔ مسٹر واگھیلا نے کہا کہ ذاتی تعلقات کو پارٹی سے متعلق وجوہات سے ختم نہیں کیا جا سکتا۔ انہوں نے پارٹی چھوڑنے کے باوجود بھی اس کی قیادت کے بارے میں کوئی بری بات نہیں کہی۔ واضح رہے کہ مسٹر گہلوت نے مسٹر واگھیلا کے استعفی کے اعلان کے بعد ان کے خلاف سخت بیان دیے تھے ۔ مسٹر واگھیلا نے دہرایا کہ انہوں نے سیاسی پارٹیوں سے دوری بنائی ہے سیاست سے سنیاس نہیں لیا ۔ انہوں نے کہا کہ سی بی آئی کو ان کے گھر پر مارے گئے چھاپے میں کچھ نہیں ملا کیونکہ انہوں نے کچھ بھی غلط نہیں کیا ہے ۔ مسٹر گہلوت کو ان کے خلاف سی بی آئی کے اور چھاپے ڈلوانے کاچیلنج بھی کیا۔

TOPPOPULARRECENT