Wednesday , August 16 2017
Home / شہر کی خبریں / ہائی کورٹس کی تقسیم ، ججوں کی بحالی کی درخواست

ہائی کورٹس کی تقسیم ، ججوں کی بحالی کی درخواست

تلنگانہ وکلاء کی گورنر نرسمہن سے ملاقات اور نمائندگی ، مرکز کے رویہ پر اظہارافسوس
حیدرآباد ۔ 5 ۔ جولائی (سیاست نیوز) گورنر ای ایس ایل نرسمہن سے کل تلنگانہ کے وکلاء نے ملاقات کی اور ہائیکورٹ کی تقسیم اور دیگر مسائل پر توجہ دلائی ۔ تلنگانہ بار اسوسی ایشن کے صدر جی موہن راؤ کی قیادت میں وکلاء نے گورنر کو ہائیکورٹ کی تقسیم میں تاخیر سے پیدا شدہ مسائل سے واقف کرایا۔ وکلاء نے کہاکہ ریاست کی تشکیل کو دو سال مکمل ہوگئے لیکن ابھی تک ہائیکورٹ کی تقسیم عمل میں نہیں آئی۔ وفد نے احتجاج کرنے والے وکلاء اور ججس کی معطلی سے بھی گورنر کو واقف کراتے ہوئے اس سلسلہ میں مداخلت کی اپیل کی ۔ بعد میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے تلنگانہ بار اسوسی ایشن کے صدر رام موہن راؤ نے کہاکہ ہائیکورٹ کی تقسیم ، آندھراپردیش سے تعلق رکھنے والے ججس کے تلنگانہ میں آپشن کو منسوخ کرنے اور معطل کئے گئے ججس کو بحال کرنے کی گورنر سے اپیل کی گئی۔ گورنر نے وکلاء کی ہمدردانہ سماعت کی اور تیقن دیا کہ وہ ہائیکورٹ کی تقسیم کے مسئلہ پر اپنی ہر ممکن مساعی کریں گے۔ بار اسوسی ایشن کے ارکان نے چیف جسٹس سپریم کورٹ سے ملاقات اور ان سے بات چیت کی تفصیلات سے گورنر کو واقف کرایا ۔ بتایا جاتا ہے کہ گورنر نے احتجاجی وکلاء سے اپیل کی کہ وہ چیف جسٹس سپریم کورٹ کی اپیل کے مطابق اپنا احتجاج واپس لے لیں۔ تاہم وکلاء نے واضح کیا کہ وہ مطالبات کی تکمیل تک احتجاج جاری رکھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہائیکورٹ کی تقسیم کے مسئلہ پر مرکز کا رویہ افسوسناک ہے اور تقسیم کو ٹالنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔ بار اسوسی ایشن نے ہائیکورٹ کی فوری تقسیم اور ججس کی معطلی ختم کرنے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ وکلاء کے اجلاس میں آئندہ لائحہ عمل کو قطعیت دی جائے گی ۔ واضح رہے کہ بار اسوسی ایشن کے وفد نے کل نئی دہلی میں چیف جسٹس سپریم کورٹ سے ملاقات کرتے ہوئے اپنے مطالبات کو پیش کیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT