Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / ہائی کورٹ کی تقسیم اور ہائی کورٹ میں تلنگانہ ججس کی تعداد میں اضافہ پر زور

ہائی کورٹ کی تقسیم اور ہائی کورٹ میں تلنگانہ ججس کی تعداد میں اضافہ پر زور

مرکزی وزیر قانون سدانندگوڑ سے ٹی آر ایس رکن پارلیمنٹ ونود کمار کی نمائندگی
حیدرآباد۔/21اپریل، ( سیاست نیوز) ٹی آر ایس کے رکن پارلیمنٹ ونود کمار نے نئی دہلی میں وزیر قانون سدانند گوڑا سے ملاقات کی اور تلنگانہ کیلئے علحدہ ہائی کورٹ کے قیام اور ہائی کورٹ کی تقسیم کے مسئلہ پر نمائندگی کی۔ انہوں نے ہائی کورٹ میں تلنگانہ ججس کی درکار تعداد کے مطابق تقررات پر بھی وزیر قانون کی توجہ مبذول کرائی۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کی تقسیم کے دو سال گزرنے کے باوجود ہائی کورٹ کی تقسیم کا عمل مکمل نہیں کیا گیا جس سے تلنگانہ عوام کو انصاف کے حصول میں دشواریوں کا سامنا ہے۔ بعد میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ونود کمار نے کہا کہ آندھرا پردیش تنظیم جدید قانون کے سیکشن 26 سے وزیر قانون سدانند گوڑا کو واقف کرایا گیا جس کے تحت تلنگانہ میں اسمبلی کی نشستوں میں اضافہ کی گنجائش موجود ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے سدانند گوڑا اور وینکیا نائیڈو کو مکتوب روانہ کئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ہائی کورٹ کی تقسیم اور اسمبلی نشستوں کی تعداد میں اضافہ کیلئے درکار اقدامات کرنے کیلئے سدانند گوڑا سے نمائندگی کی گئی۔ انہوں نے اس مسئلہ پر ضروری کارروائی کا تیقن دیا۔ ونود کمار نے کہا کہ 60برسوں کے دوران متحدہ ریاست میں جو ناانصافیاں ہوئی ہیں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ اس کے خاتمہ کی مساعی کررہے ہیں۔ ونود کمار نے ہائی کورٹ کی تقسیم اور ہائی کورٹ میں تلنگانہ ججس کی تعداد میں اضافہ کی جانب توجہ مبذول کرائی۔ انہوں نے 25اپریل سے شروع ہونے والے پارلیمنٹ سیشن میں ضروری ترمیمی بل پیش کرنے کی وزیر قانون سے خواہش کی۔ سدانند گوڑا نے تیقن دیا کہ وہ اندرون دو یوم محکمہ کے عہدیداروں سے مشاورت کرتے ہوئے اہم فیصلے کریں گے۔ ونود کمار نے کہا کہ ملک بھر کی تمام ہائی کورٹس میں ججس کے 450 عہدے خالی ہیں۔ متحدہ ریاست کی ہائی کورٹ میں ججس کے تقررات اور دیگر اُمور میں تلنگانہ کے ساتھ ناانصافی ہوئی ہے۔ انہوں نے 42فیصد تلنگانہ ججس کے تقررات کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے لوور جوڈیشیری سے ہائی کورٹ تک تقررات میں تلنگانہ سے انصاف کی مانگ کی۔ سدانند گوڑا نے ججس کے تقررات کے سلسلہ میں ہائی کورٹ کے چیف جسٹس سے بات چیت کا تیقن دیا۔ انہوں نے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ اور تلنگانہ کے ایڈوکیٹ جنرل سے بھی مشاورت کا تیقن دیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT