Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / ہائی کورٹ کی تقسیم کے لیے ریاستی حکومت کوشاں

ہائی کورٹ کی تقسیم کے لیے ریاستی حکومت کوشاں

مرکزی وزیر قانون سے ٹی ار ایس ایم پی ونود کمار کی نمائندگی
حیدرآباد۔/12 جولائی، ( سیاست نیوز) ٹی آر ایس کے رکن پارلیمنٹ بی ونود کمار نے نئی دہلی میں مرکزی مملکتی وزیر قانون پی پی چودھری سے ملاقات کی اور ہائی کورٹ کی تقسیم کے مسئلہ پر نمائندگی کی۔ مرکزی کابینہ میں حالیہ تبدیلیوں کے موقع پر پی پی چودھری کو مملکتی وزیر قانون کی حیثیت سے ذمہ داری دی گئی۔ ونود کمار نے وزارت میں شمولیت اور قانون جیسے اہم قلمدان کیلئے مبارکباد پیش کی اور نیک تمناؤں کا اظہار کیا۔ انہوں نے ہائی کورٹ کی تقسیم میں تاخیر کا حوالہ دیا اور کہا کہ تلنگانہ ریاست کے قیام  کو دو سال مکمل ہوگئے لیکن آج تک ہائی کورٹ تقسیم نہیں کی گئی۔ آندھرا پردیش تنظیم جدید قانون میں ہائی کورٹ سمیت تمام اداروں کی تقسیم کا واضح طور پر ذکر کیا گیا ہے۔ انہوں نے ملکتی وزیر قانون سے اپیل کی کہ وہ ہائی کورٹ کی تقسیم کے سلسلہ میں مساعی کریں۔ ونود کمار کے مطابق مرکزی وزیر نے تیقن دیا کہ وہ بہت جلد اس مسئلہ پر توجہ مبذول کریں گے اور ان سے بات چیت کریں گے۔ ونود کمار نے ہائی کورٹ کی عدم تقسیم کے سبب وکلاء اور عوام کو ہونے والی دشواریوں سے واقف کرایا۔ اس کے علاوہ انہوں نے وکلاء کے احتجاج اور عدالتوں میں کام کاج کے ٹھپ ہوجانے کی تفصیلات بھی بیان کی۔ انہوں نے کہا کہ ہائی کورٹ کی تقسیم کے سلسلہ میں مرکزی حکومت کو جلد اقدامات کرنے چاہیئے تاکہ تلنگانہ ریاست کے ساتھ انصاف ہوسکے۔ انہوں نے کہا کہ ججس کے تقررات اور آندھرائی ججس کو تلنگانہ میں آپشن کے ذریعہ قیام کی اجازت دی جارہی ہے جو تلنگانہ کے ساتھ سراسر ناانصافی ہے۔

TOPPOPULARRECENT