Friday , August 18 2017
Home / ہندوستان / ہاوزنگ شعبہ میں خانگی سرمایہ کاری ناگزیر: وینکیا نائیڈو

ہاوزنگ شعبہ میں خانگی سرمایہ کاری ناگزیر: وینکیا نائیڈو

نئی دہلی ۔ 16 ۔ ستمبر : ( سیاست ڈاٹ کام) : شعبہ امکنہ میں خانگی سرمایہ کاروں کو مدعو کرتے ہوئے حکومت نے آج کہا ہے کہ سال 2022 تک ہر ایک کے لیے مکان کا نشانہ حاصل کرنے میں وہ کلیدی رول ادا کرسکتے ہیں ۔ مرکزی وزیر امکنہ اور انسداد شہری غربت مسٹر ایم وینکیا نائیڈو نے آج یہاں اسوچھیم کے اجلاس کو مخاطب کرتے ہوئے بتایا کہ یہ مناسب وقت ہے کہ خانگی سرمایہ کار پیشرفت کرتے ہوئے ضرورت مندوں کو قابل استعداد قیمت پر بہترین مکانات فراہم کرنے میں سرگرم رول ادا کریں ۔ انہوں نے بتایا کہ ملک بھر میں فی الحال 18.78 ملین مکانات کی قلت پائی جاتی ہے اور آئندہ 8 سال کے دوران ہر سال 2.34 ملین مکانات تعمیر کرنے کی ضرورت ہوگی ۔ مسٹر وینکیا نائیڈو نے کہا کہ ہاوزنگ سیکٹر میں سرمایہ کا ری سے نہ صرف مکانات کی تعمیر میں توسیع ہوگی بلکہ عوام کی معیار زندگی اور کام کے حالات میں بہتری واقع ہوگی ۔ انہوں نے سلم بستیوں کے مکینوں کو یہ تیقن دیا ہے کہ انہیں اسی مقام پر مکان تعمیر کیا جائے گا یا پھر دوسرے مقام پر مکان فراہم کیا جائے گا ۔ راجیہ سبھا میں تحویل اراضی بل کی منظوری میں رکاوٹ پیدا کرنے پر اپوزیشن کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ترقی کے لیے حصول اراضی بہت ضروری ہے ۔ مسٹر نائیڈو نے استفسار کیا کہ مکانات ، طیرانگاہ ، ریلوے اسٹیشن اور دیگر انفراسٹرکچر ہوا میں تعمیر نہیں کئے جاسکتے اور قابل استطاعت مکانات کی تعمیر کے لیے اراضی ایک اہم اور بنیادی ضرورت ہے اور زمینات کی دستیاب کے بغیر مکانات کس طرح تعمیر کئے جاسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ این ڈی اے حکومت تحویل اراضی بل 2013 میں ترمیم کی کوشش میں ہے کیوں کہ بیشتر ریاستوں نے یہ اصرار کیا ہے کہ اراضی بل میں ترمیم کے بغیر حصول اراضیات ناممکن ہوگیا ہے ۔ لیکن بعض گوشوں کی جانب سے اس کی مخالفت کی جارہی ہے گو کہ یہ لوگ جب اقتدار میں تھے اس وقت تجارتی مقاصد ( خصوصی معاشی منطقوں ) کے لیے اندھادھند اراضیات حاصل کرلی تھی لیکن اب اس کی مخالفت کرتے ہوئے ترقی کی راہ میں رکاوٹ پیدا کررہے ہیں

TOPPOPULARRECENT