Thursday , October 19 2017
Home / دنیا / ہلاری کلنٹن کے ای میلس لاپرواہی لیکن امریکی صیانت کو خطرہ نہیں : صدر امریکہ بارک اوباما

ہلاری کلنٹن کے ای میلس لاپرواہی لیکن امریکی صیانت کو خطرہ نہیں : صدر امریکہ بارک اوباما

واشنگٹن ۔ 11 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) سابق وزیرخارجہ امریکہ ہلاری کلنٹن نے قوم کی صیانت کو خطرہ میں نہیں ڈالا صرف ای میل ان کی لاپرواہی کا نتیجہ تھے۔ صدر امریکہ بارک اوباما نے کہا کہ اس معاملہ کی تحقیقات پر کوئی سیاسی اثرورسوخ استعمال نہیں کیا گیا۔ اوباما نے فاکس نیوز کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ مجھے اب بھی یقین ہیکہ امریکہ کی قومی سلامتی خطرہ میں نہیں پڑی۔ اب جبکہ میں یہ کہہ چکا ہوں یہ تسلیم کرتا ہوں کہ انہوں نے لاپرواہی کے ساتھ ای میلس کا استعمال کیا حالانکہ وہ ان ہی کی ملکیت تھے اور انہوں نے اپنی غلطی تسلیم بھی کرلی ہے۔ اوباما ایک سوال کا جواب دے رہے تھے جو ای میل کے بارے میں اور ان کے خانگی ای میل سرور کے بارے میں کئے جارہے ہیں۔ ہلاری کلنٹن اپنے گھر میں بھی ایک ای میل سرور رکھتی تھی تاہم انہوں نیقومی صیانت کو یا اوباما انتظامیہ کو خطرہ میں نہیں ڈالا۔ اس مسئلہ کو 68 سالہ ڈیموکریٹک پارٹی کی صدارتی امیدوار کی دوڑ میں سب سے آگے ہلاری کلنٹن کے خلاف ان کے قریب ایک ہتھیار کے طور پر استعمال کررہے ہیں۔ اپنی انتخابی مہم میں بھی ری پبلکن پارٹی کے صدارتی امیدوار اس معاملہ کو اچھال رہے ہیں۔ ڈیموکریٹک پارٹی کی صدارتی امیدواروں کی دوڑ میں ہلاری کلنٹن سب سے آگے ہیں۔ وہ اگر منتخب ہوجائیں تو صدر بارک اوباما کی جنوری میں سبکدوشی کے بعد امریکہ کی اولین خاتون صدر بن سکتی ہیں۔ ہلاری کلنٹن کا دفاع کرتے ہوئے صدر امریکہ بارک اوباما نے کہاکہ وہ سمجھتے ہیں کہ ہلاری کلنٹن نے چار سال تک بحیثیت وزیرخارجہ امریکہ کی نمایا ں انداز میں خدمت کی ہے۔ کوئی بھی یہ نہیں کہہ سکتا کہ انہوں نے بعض راستوں پر ٹھوکر کھائی ہے۔ جہاں تک ای میلس کا معاملہ ہے انہوں نے اپنی بہترین صلاحیت کے ساتھ اپنے فرائض انجام دیئے تھے ۔ تاہم اس معاملہ میں لاپرواہی سے کام کیا تھا۔ معاملہ کی آزادانہ تحقیقات کا تیقن دیتے ہوئے بارک اوباما نے کہاکہ وہ اپنے عہدیداروں سے اس سلسلہ میں بات چیت کرچکے ہیں۔ کوئی بھی تحقیقات میں دخل اندازی نہیں کرے گا ۔

TOPPOPULARRECENT