Sunday , October 22 2017
Home / Top Stories / ہماچل پردیش میں بادل پھٹ پڑے : سیلاب سے 4 ہلاک

ہماچل پردیش میں بادل پھٹ پڑے : سیلاب سے 4 ہلاک

ایک خاندان کے تین افراد مکان منہدم ہونے سے زندہ دفن ۔ مزید بارش کی پیش قیاسی
شملہ 8 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) ہماچل پردیش کے منڈی ضلع میں دھرم پور علاقہ میں بادل پھٹ پڑنے سے شدید بارش کا سلسلہ جاری ہے جس کے نتیجہ میں کم از کم چار افراد کی ہلاکت کا اندیشہ ہے جن میں ایک خاندان کے تین افراد بھی شامل ہیں۔ زبردست بارش کے نتیجہ میں وسیع علاقہ زیر آب آگیا اور کئی گاڑیاں بھی بہہ گئیں۔ علاقہ میں تقریبا 100  سڑکیں بند ہوگئی ہیں۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ایک خاندان کے تین افراد کے اس وقت زندہ دفن ہوجانے کا اندیشہ ہے جب زمین کھسکنے سے ان کا مکان منہدم ہوگیا جبکہ ایک سادھو سون خود ندی کے پانی میں بہہ گیا ۔ پولیس عہدیداروں کے بموجب تقریبا ایک درجن لوگ دھرمپور بس اسٹانڈر پر بس کے منتظر تھے کہ یہاں اچانک سون خود ندی کا پانی داخل ہوگیا اور انہیں پہلی منزل پر پہونچ کر پناہ لینی پڑی ۔ پانی یہاں کئی دوکانات اور مکانات میں داخل ہوگیا ہے ۔ کہا گیا ہے کہ تین بسیں اور  تقریبا چار درجن مکانات و دوکانیں پانی میں بہہ گئے ہیں جبکہ تقریبا چھ چھوٹی گاڑیاں بھی سیلاب کے پانی میں بہہ گئیں۔ حکام کا کہنا ہے کہ شدید بارش کے نتیجہ میں دھرم شالہ ‘ کانگرا ‘ سوجن پور ‘ سندر نگر اور دوسرے مقامات پر پانی جمع ہوگیا ہے ۔ قومی شاہراہ 88 کو دو مقامات پر بند کردیا گیا ہے جبکہ منڈی ‘ کلو ‘ چمبا ‘ شملہ اور کانگرا اضلاع میں تقریبا 100 لنک روڈز کو بھی بند کردیا گیا ہے کیونکہ ان سڑکوں پر وسیع پیمانے پر زمین کھسکنے کے واقعات پیش آئے ہیں۔ ریاست میں تقریبا تمام بڑی دریائیں اور ان کی ذیلی دریاوں کی سطح آب میں مسلسل اضافہ ہوتا جا رہا ہے اور دریاوں کے قریب رہنے والے عوام سے کہا گیا ہے کہ وہ چوکس رہیں اور ضروری احتیاطی اقدامات کریں۔ مقامی رکن اسمبلی موہندر سنگھ نے کہا کہ سیلاب کے نتیجہ میں پانچ افراد ہلاک ہوگئے ہیں تاہم مقامی انتظامیہ نے صرف تین افراد کے مکان کے ملبہ میں زندہ دفن ہوجانے کی توثیق کی ہے ۔ محکمہ موسمیات کی جانب سے کل بھی چند مقامات پر بھاری بارش کی پیش قیاسی کی گئی ہے ۔ ریاست کے پہاڑی اور بلند مقامات پر آئندہ چھ دن کے دوران بھی شدید بارش کی پیش قیاسی کی گئی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT