Sunday , October 22 2017
Home / Top Stories / ہمدردی کرنے والے نوڈل آفیسر ڈاکٹر کفیل خاں کو ذمہ داری سے ہٹادیا گیا

ہمدردی کرنے والے نوڈل آفیسر ڈاکٹر کفیل خاں کو ذمہ داری سے ہٹادیا گیا

یوگی کا گورکھپوردواخانہ کا دورہ ۔ عوام نے سیاہ جھنڈیاں دکھائیں، ایک اور بچہ فوت

گورکھپور / لکھنؤ ۔ /13 اگست (سیاست ڈاٹ کام) گورکھپور سرکاری ہاسپٹل میں شیرخوار بچوں کی موت پر اپوزیشن کی شدید تنقیدوں اور استعفیٰ کے مطالبے کے دوران چیف منسٹر یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا کہ اس واقعہ کے ذمہ دار افراد کو سخت سزاء دی جائے گی ۔ مرکزی حکومت نے عوامی برہمی کو کم کرنے کے مقصد سے گورکھپور میں 85 کروڑ روپئے کی لاگت سے ریجنل میڈیکل سنٹر قائم کرنے کا اعلان کیا جہاں بچوں کے عوارض پر ریسرچ کی سہولت ہوگی ۔ بی آر ڈی میڈیکل کالج ہاسپٹل میں آکسیجن کی سربراہی متاثر ہونے کی وجہ سے /7 اگست سے 60 سے زائد بچوں کی موت واقع ہوگئی ۔ آکسیجن سپلائیر کو بلس کی عدم ادائیگی کے سبب یہ صورتحال پیدا ہوئی ۔ بچوں کی ہلاکت کے خلاف دارالحکومت لکھنؤ میں کانگریس نے احتجاج کرتے ہوئے لاپرواہی برتنے والوں کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرنے کا مطالبہ کیا ۔کانگریس نے بچوں کی اموات کو ’’قتل ‘‘ قرار دیتے ہوئے چیف منسٹر یوگی آدتیہ ناتھ سے استعفیٰ کا بھی مطالبہ کیا اور کہا کہ وہ ایک ادارہ کو سنبھالنے کی صلاحیت نہیں رکھتے ، پھر ساری ریاست کو کس طرح سنبھالیں گے ۔ اترپردیش کانگریس کمیٹی کے صدر راج ببر نے کہا کہ گزشتہ چار دن میں 70 بچوں کا قتل ہوا اور اس کیلئے حکومت ذمہ دار ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آدتیہ ناتھ اپنے آبائی ضلع میں ایک ہاسپٹل کو سنبھال نہیں پائے وہ بھلا ساری ریاست کو کس طرح سنبھالیں گے ۔ انہیں مستعفی ہوجانا چاہئیے ۔ آدتیہ ناتھ نے آج ہاسپٹل کا دورہ کیا اور اس سانحہ کو سیاسی رنگ نہ دینے کی خواہش کی ۔ اس دوران ڈاکٹر کفیل خان کو جو ہاسپٹل میں شعبہ اطفال کے نوڈل آفیسر تھے اور جنہیں بحران کے وقت ذاتی رقم خرچ کرتے ہوئے آکسیجن سیلنڈرس خریدنے کی بنا ہیرو کے طور پر پیش کیا جارہا تھا ، آج خدمات سے ہٹادیا گیا ہے ۔ ہاسپٹل کے ایک اعلیٰ عہدیدار نے بتایا کہ ڈاکٹر کفیل خان کو خدمات سے ہٹادیا گیا ہے لیکن یہ غلط فہمی نہیں ہونی چاہئیے کہ انہیں معطل کیا جارہا ہے ۔ اس دوران گورکھپور میں بابا راگھو داس میڈیکل کالج ہاسپٹل میں مرنے والے بچوں کی تعداد 72 ہوگئی ہے ۔ کہا گیا ہے کہ آج ایک اور بچہ فوت ہوگیا ہے ۔ اطلاعات میں کہا گیا ہے کہ جب چیف منسٹر اس دواخانہ کے دورہ کو آ رہے تھے انہیں عوام کے احتجاج کا سامنا کرنا پڑا ۔ کہا گیا ہے کہ یوگی آدتیہ ناتھ کو بی آر ڈی میڈیکل کالج پہونچنے پر احتجاجیوں نے سیاہ جھنڈیاں دکھائیں۔ چیف منسٹر نے کہا کہ اس سارے واقعہ میں جو کوئی ذمہ دار ہیں ان کے خلاف کارروائی کی جائیگی ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے چیف سکریٹری کی قیادت میں ایک کمیٹی قائم کی ہے جو جلد ایک رپورٹ پیش کریگی ۔ کمیٹی اس واقعہ کی تحقیقات کریگی اور اس کی بنیاد پر ذمہ دار قرار پانے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائیگی ۔ چیف منسٹر کے ہمراہ اس دورہ میں مرکزی وزیر صحت جے پی نڈا بھی تھے جنہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت نے ماہر ڈاکٹرس کی ایک ٹیم دواخانہ کو روانہ کی ہے ۔

گورکھپور کالج پرنسپل کی معطلی غلط : آئی ایم اے
نئی دہلی ۔ /13 اگست (سیاست ڈاٹ کام) انڈین میڈیکل اسوسی ایشن (آئی ایم اے) نے گورکھپور کے بی آر ڈی میڈیکل کالج پرنسپل کی معطلی کو فوری برخواست کرنے کا مطالبہ کیا ۔ ریاستی حکومت نے ہاسپٹل میں اندرون 48 گھنٹے 30 بچوں کی موت کے بعد پرنسپل ڈاکٹر راجیو مشرا کو لاپرواہی کی بنا معطل کردیا تھا ۔ آئی ایم اے نے ایک بیان میں کہا کہ شعبہ صحت بالخصوص اہمیت کے حامل شعبوں میں تمام ادائیگیاں بروقت کی جانی چاہئیے یا پہلے ہی رقم ادا کرنی بہتر ہوتی ہے ۔ آئی ایم اے کے قومی صدر ڈاکٹر کے کے اگروال اور نائب صدر ڈاکٹر روی وانکھیڈکر نے کہا کہ میڈی کلیم اور دیگر رقمی پابجائی بھی بروقت ہونی چاہئیے ۔ آکسیجن کی قلت کے سبب یہ اموات ہوئی ہیں اور ڈاکٹر راجیو مشرا پر الزام ہے کہ انہوں نے سپلائیر کو بلز بروقت ادا نہیں کئے ۔

 

TOPPOPULARRECENT