Thursday , October 19 2017
Home / شہر کی خبریں / ہمہ سطحی فلائی اوورس کی تعمیر کیلئے ٹنڈرس پر جی ایچ ایم سی کی سرد مہری

ہمہ سطحی فلائی اوورس کی تعمیر کیلئے ٹنڈرس پر جی ایچ ایم سی کی سرد مہری

اسٹریٹیجک روڈ ڈیولپمنٹ پلان کے تحت کاموں کے لیے چند ایجنسیوں کی دلچسپی
حیدرآباد ۔ 6 ۔ نومبر : ( ایجنسیز ) : ریاستی حکومت کے مجوزہ پلان اسٹریٹیجک روڈ ڈیولپمنٹ پلان ( ایس آر ڈی پی ) کے تحت 18 ہمہ سطحی فلائی اوورس ، انڈر پاسیس ، گریڈ سپریٹرس اور جی ایچ ایم سی کے مختلف مقامات میں جنکشنس کی بہتری کے سلسلے میں جی ایچ ایم سی سرد مہری کا رویہ اختیار کیے ہوئے ہے ۔ اس کے تحت پانچ پیاکیجس کو ستمبر میں مرتب کیا گیا ۔ اس طرح جی ایچ ایم سی نے مکمل کام کو پانچ پیاکیجس میں تقسیم کرتے ہوئے عمل کا آغاز کیا ۔ پانچ میں دوسرے اور تیسرے پیاکیج کے لیے ایک واحد ایجنسی کو جب کہ مابقی تین پیاکیجس کے لیے دو ایجنسیوں کو کام سونپنے پر غور کیا جارہا ہے ۔ اس سلسلے میں ایجنسیوں نے ان کی بڈس داخل کردی ہیں۔ اناوٹی پے منٹ موڈ کی تنسیخ کے بعد اس سال جولائی میں ٹنڈر کے سلسلے میں جی ایچ ایم سی نے 19 ستمبر کو تازہ درخواستیں طلب کیں اور انجینئرنگ پروکیورمنٹ اینڈ کنسٹرکشن (EPC) ٹرن کی اساس پر آخری تاریخ 4 نومبر کو ردعمل کی امید تھی لیکن لگتا ہے اس پر پانی پھر جائے گا ۔ کام کے لیے چند ایجنسیوں کا دلچسپی دکھانا اس بات کو ظاہر کرتا ہے ۔ جی ایچ ایم سی ذرائع کے بموجب یہ سرد مہری قیمتی خانگی جائیدادوں کے حصول ، یوٹیلیٹز کی منتقلی اور دیگر مسائل کی وجہ بتائی جارہی ہے ۔ پہلے ہی حیدرآباد میٹرو ریل ان مسائل سے دوچار رہا ہے ۔ پہلے پیاکیج کے تحت دو ایجنسیوں نے چھ جنکشنس کے بی آر پارک داخلہ ، مہاراجہ اگراسین جنکشن ( روڈ نمبر 12 ) ، فلم نگر روڈ نمبر 45 جنکشن ، جوبلی ہلز چیک پوسٹ اور کینسر ہاسپٹل جنکشن ( روڈ نمبر 10 جنکشن ) پر ہمہ سطحی فلائی اوورس اور گریڈ سپریٹرس کی تعمیر کے لیے بولیاں داخل کی ہیں ۔ پیاکیج I کی جملہ لاگت تقریبا 322.92 کروڑ روپئے ہے ۔ پیاکیج II کے تحت صرف ایک ایجنسی نے بولی داخل کی ہے ۔ اس کے تحت ایل بی نگر جنکشن ، بیرا ملگوڑہ جنکشن ، کامنینی ہاسپٹل جنکشن ، انر رنگ روڈ اور چنتل کنٹہ چیک پوسٹ جنکشن کی تعمیر اور بہتری کے لیے تخمینہ 331.38 لگایا گیا ہے ۔ پیاکیج III کے لیے بھی ایک ہی ایجنسی آگے آئی ہے ۔ اس کے تحت اپل اور رسول پورہ پر گریڈ سپرئیرس کی تعمیر اور بہتری انجام دینے تخمینہ 160.07 کروڑ روپئے لگایا گیا ۔ اسی طرح پیاکیج IV کے تحت دو ایجنسیوں نے بولیاں داخل کیں ۔ اس کے تحت ہمہ سطحی بائیو ڈائیور سٹی پارک جنکشن ، ایپا سوسائٹی جنکشن ، راجیو گاندھی مجسمہ جنکشن اور مائنڈ اسپیس کی تعمیر کے لیے 196.13 کروڑ روپئے لگایا گیا ہے ۔ پیاکیج V کے تحت دو ایجنسیوں نے بولیاں داخل کی ہیں ۔ اس کے تحت اویسی ہاسپٹل اور بہادر پورہ پر گریڈ سپریٹرس یا فلائی اوورس کی تعمیر و بہتری کیلئے 86.21 کروڑ کا تخمینہ لگایا گیا ہے ۔ ای پی سی ٹرن کی سسٹم کے تحت منتخب ایجنسیوں کو سروے ، انویسٹیگیشن ، تفصیلی ڈیزائن اور ڈرائنگس اور تعمیر انجام دینا ہوگا ۔ اس سلسلے میں وہ تمام امور سے جو درپیش ہوں انہیں نمٹنا ہوگا ۔۔

TOPPOPULARRECENT