Tuesday , September 19 2017
Home / دنیا / ہندوؤں کی پیدائش میں بتدریج کمی آئے گی: ریسرچ

ہندوؤں کی پیدائش میں بتدریج کمی آئے گی: ریسرچ

سال 2055 تا 2060 کے درمیان مسلم بچوں کی پیدائش عیسائیوں سے زائد ہوگی

واشنگٹن۔/6اپریل، ( سیاست ڈاٹ کام ) ہندوؤں کی پیدائش میں بتدریج کمی واقع ہوگی۔ سال 2055 اور 2060 کے درمیان ہندو آبادی میں ڈرامائی طور پر شدید کمی دیکھی جایء گی۔ ہندوستان میں خاندانی منصوبہ بندی اور پیدائش پر روک لگائے جانے کے باعث ہندوؤں کی پیدائش شرح گھٹ جائے گی۔ ہندوستان کی ہندو آبادی اس وقت عالمی آبادی کا 94 فیصد ہے ۔ نئے پیو ریسرچ میں بتایا گیا ہے کہ مسلمانوں کی آبادی میں اضافہ ہوگا۔ مسلم خواتین سے پیدا ہونے والے بچوں کی تعداد خود عیسائیوں کے گھروں میں پیدا ہونے والے بچوں پر سبقت لے جائے گی۔ آنے والے دو دہوں میں ساری دنیا میں عیسائی آبادی بھی کم ہوگی اور اسلام سال 2075 تک دنیا کا سب سے بڑا مذہب ہوگا۔ سال 2015کے بعد سے عیسائیوں اور مسلمانوں کی آبادی میں اضافہ کی توقع ظاہر کی گئی اور یہ سلسلہ 2060 تک جاری رہے گا۔ لیکن مسلمانوں کے گھروں میں بچوں کی پیدائش کا عمل تیز ہوجائے گا اور ان کی پیدائش کی شرح سال 2035 تک بڑھ جائے گی۔ مسلم مائیں سب سے زیادہ بچوں کو پیدا کریں گی۔ اس کے ساتھ ساتھ سال 2055 اور 2060 کے درمیان عیسائیوں کی پیدائش شرح میں مسلم پیدائش شرح کی طرح برقرار رہے گی۔ ان دونوں گروپوں کے درمیان پیدائش شرح کا فرق بھی پیدا ہونے کا امکان ہے اور امکان ظاہر کیا گیا ہے کہ یہ 6ملین کے نشانہ کو پہنچے گی۔ ( 232 ملین پیدائش مسلمانوں میں ہوگی جبکہ  276 ملین پیدائش شرح عیسائیوں میں پائی جائے گی اور امریکی ادارہ کے جائزہ میں بتایا گیا ہے کہ ہندوؤں کے گھروں میں بچوں کی پیدائش کی شرح ڈرامائی طور پر گھٹ جائے گی۔ جہاں سال 2055 اور 2060 کے درمیان 33ملین بچوں کی پیدائش ریکارڈ کی جاسکتی ہے۔ ہندوستان میں برتھ کنٹرول کی وجہ سے سال 2010 اور 2015 کے درمیان ہی بچوں کی پیدائش میں کمی واقع ہوئی ہے۔ اسلام پہلے ہی سے دنیا کا تیزی سے پھیلتا ہوا مذہب ہے، جہاں مسلمانوں کی آبادی میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے اور توقع ہے کہ پیدائش کی شرح 70فیصد تک پہنچ جائے گی۔ جبکہ عیسائیوں نے اپنے گھروں میں بچوں کی پیدائش کی شرح کا نشانہ 34فیصد مقرر کیا ہے۔ اس مرحلہ میں دونوں گروپ کی آبادی یکساں رہے گی۔ ایشیا پیسیفک خطہ میں مسلمانوں کی آبادی 62 فیصد ہے۔ ان میں سب سے زیادہ انڈونیشیا میں ہیں اس کے بعد ہندوستان ، پاکستان، بنگلہ دیش، ایران اور ترکی میں مسلم آبادی زیادہ پائی جاتی ہے۔
شام سے متعلق غیرمصدقہ الزامات پر پوٹن برہم
ماسکو ۔6 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) صدر روس ولادیمیر پوٹن نے آج شام سے متعلق کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال پر کی جانے والی تنقیدوں پر برہمی ظاہر کی اور کہا کہ یہ بے بنیاد الزامات ہیں۔ وزیراعظم اسرائیل بنجامن نتن یاہو سے فون پر کی گئی بات چیت میں پوٹن نے ان الزامات کو مسترد کرتے ہوئے اپنی ناراضگی ظاہر کی۔ کریملن نے یہ بات بتائی۔ دونوںن قائدین کے درمیان 4 اپریل کو صوبہ ادلیب میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کے واقعہ پر تبادلہ خیال کیا۔

TOPPOPULARRECENT