Sunday , October 22 2017
Home / ہندوستان / ہندوبنگلہ دیشیوں کو ہندوستانی شہریت پر اعتراض

ہندوبنگلہ دیشیوں کو ہندوستانی شہریت پر اعتراض

مرکز کی سازش کو ناکام بنانے آر ٹی آئی جہد کار کی اپیل
گولہ گھاٹ (آسام) ۔ 19 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کاکم) کرشک مکتی سنگرام سمیتی لیڈر اکھیل گوگوئی نے آج یہ الزام عائد کیا ہے کہ بنگلہ دیشی ہندو تارکین وکو شہریت فراہم کرنے مرکز کا اقدام ایک بڑی سازش ہے اور اسے ناکام بنانے کا عزم کیا ہے۔ گولہ گھاٹ جیل سے باہر آنے کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے ریاستی عوام بالخصوص ورکرس اور کسانوں سے پرزور اپیل کی ہے کہ ریاست کی مخصوص شناخت برقرار رکھنے کے لئے جدوجہد کریں اور آئندہ 3 ماہ میں یہ ثابت کردیں کہ ہندو بنگلہ دیشیوں کو ہندوستانی شہریت عطا کرنے کی کوششوں کو کس طرح ناکام بنایا جائے گا آر ٹی آئی کارکن اور کے ایم ایس ایس صدر نے الزام عائد کیا کہ آسام ایک بحران سے دوچار ہے۔ اور بنگلہ دیشی ہندو تارکین وطن کو ہندوستانی شہریت کی فراہمی ایک بڑی سازش ہے۔ مسٹر گوگوئی نے کہا کہ بی جے پی حکومت، سٹیزن شپ ایکٹ میں ترمیم کے ذریعہ آسام معاہدہ میں ردوبدل کرنے کی کوشش میں ہے۔ لیکن ان کی تنظیم کے ایم ایس ایس، اس اقدام کے خلاف متحدہ جدوجہد کرے گی۔ انہوں نے آسام میں آکشن (ہراج) کے ذریعہ آئیل فیلڈس کو خانگیانے کے خلاف اعلان جنگ کیا اور آسام پبلک سرویس کمیشن میں کرپشن کی تحقیقات کو منطقی انجام تک پہنچانے کا مطالبہ کیا۔ گوہاٹی ہائی کورٹ نے 16 ڈسمبر کو گوگوئی کی ضمانت منظور کرتے ہوئے ان کی رہائی کے لئے راہ ہموار کی تھی۔ کزرونگا نیشنل پارک کے قریب مکینوں کے تخلیہ کے دوران مشتعل کرنے کے الزام میں انہیں 2 اکٹوبر کو ایک پریس کانفرنس سے گرفتار کیا گیا تھا ان کی اشتعال انگیزی کے باعث 2 احتجاجی ہلا ک ہوئے تھے۔ ابتداء میں گوگوئی کو مذکورہ کیس کے سلسلہ میں ناگائوں جیل میں محروس کیا گیا بعدازاں بعض پرانے کیسوں کے سلسلہ میں انہیں گرفتار کرلیا گیا جو کہ گزشتہ 10 سال کے دوران ریاست بھر میں درج کئے گئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT