Sunday , October 22 2017
Home / Top Stories / ہندوستانی توانائی شعبہ میں بڑے پیمانے پر اصلاحات ناگزیر

ہندوستانی توانائی شعبہ میں بڑے پیمانے پر اصلاحات ناگزیر

تیل اور گیس کے مسائل پر قومی و بین الاقوامی اداروں سے وزیراعظم کا تبادلۂ خیال ، سعودی ویژن 2030 کی ستائش
نئی دہلی ۔9 اکٹوبر۔( سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے آج کہاکہ ہندوستان میں توانائی شعبہ کا موقف انتہائی غیرمنظم اور ناہموار ہے جس کے کئی زمروں میں اصلاحات کی گنجائش ہنوز موجود ہے ۔ وزیراعظم مودی نے دنیا بھر کی سرکردہ تیل اور گیس کمپنیوں کی سی ای اوز اور ماہرین سے بات چیت کے دوران ایک جامع توانائی پالیسی کی تجویز کا خیرمقدم کیا۔ وزیراعظم کے دفتر ( پی ایم او ) سے جاری بیان میں یہ اطلاع دیتے ہوئے مزید بتایا گیا کہ مودی نے تیل اور گیس کے شعبہ میں اختراعات و تحقیق کے تمام امکانات کاخیرمقدم کیا اور اجتماعی حیاتیاتی توانائی کی پوشیدہ صلاحیتوں کا پتہ چلاتے ہوئے انھیں بروئے کار لانے کی ضرورت پر زور دیا۔ اس مقصد کے لئے انھوں نے کوئلہ کو گیس میں تبدیل کرنے کیلئے شراکت اور مشترکہ وینچرس کو مدعو کیا ۔ وزیراعظم کے اس اجلاس میں روسنفٹ ، بی پی ، ریلائینس ، سعودی آرامکو، ایگزان موبل ، رائیل ، ڈچ شل ، ویدانتا ، ووڈمیکنزی ، آئی ایچ ایس مارکٹ ، شلمبرگر ، ہیلیبرٹن ، کول ، او این جی سی ، انڈین آئیل ، تیل ، پٹرونٹ ایل این جی ، آئیل انڈیا ، ایچ پی سی ایل ، ڈیلونکس انرجی ، این آئی پی ای پی ، انٹرنیشنل گیس یونین ، ورلڈ بینک اور انٹرنیشنل انرجی ایجنسی کے سربراہان یانمائندوں نے شرکت کی ۔ پی ایم او سے جاری بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ توانائی کی یکسوئی پالیسی ، کنٹراکٹ کی ترتیب ، تدوین اور انتظام طبعات الارض کی تفصیلات کی ضروریات ، حیاتیاتی ایندھن کی حوصلہ افزائی ، گیس کی سربراہی میں بہتری ، گیس ہب کا قیام ، قواعد و ضابطہ کے مسائل جیسے موضوعات پر بھی اس اجلاس میں گفت وشنید کی گئی ۔ بیان میں کہا گیا کہ مختلف شرکاء نے ہندوستان میں گزشتہ تین سال کے دوران کئے گئے اصلاحات اور پیشرفت کی ستائش کی ۔ علاوہ ازیں توانائی کے شبہ میں وزیراعظم کی طرف سے کی گئی اصلاحات پر عمل آوری کو سراہا گیا۔ بیان میں کہا گیا ہیکہ اکثر شرکاء نے گیس اور برقی کو بھی جی ایس ٹی چوکٹھے میں شامل کرنے کی پرزور سفارش کی ۔ نیتی آیوگ اور معتمد مال ہنسمکھ آدمیہ کے ربط و تعاون سے منعقدہ اس اجلا س میں تیل اور گیس کے شعبہ سے متعلق جی ایس ٹی کونسل کے حالیہ فیصلوں کو بھی اُجاگر کیا گیا ۔ وزیراعظم نریندر مودی نے نظریات کی پیشکشی کیلئے شرکاء سے اظہارتشکر کیا اور کہاکہ 2016 ء میں منعقدہ گزشتہ اجلاس میں موصولہ کئی تجاویز پالیسی سازی میں معاون ثابت ہوئے ۔ وزیراعظم مودی نے روس کے صدر ولادیمیر پوٹن اور پٹرولیم ادارہ روسنفٹ سے ہندوستانی توانائی شعبہ میں تعاون اور عہد کیلئے اظہارتشکر کیا۔
مودی نے اپنے حالیہ دورہ سعودی عرب کو گرمجوشی کے ساتھ یاد دلاتے ہوئے مملکت سعودی عرب کی ویژن 2030ء دستاویز کی بھرپور ستائش کی اور کہا کہ اس دستاویز میں بالخصوص توانائی کے شعبہ سے متعلق متعدد ترقی پسند فیصلے کئے گئے ہیں۔ وزیراعظم مودی نے کہاکہ مستقبل قریب میں وہ ہندوستان اور سعودی عرب کے درمیان تعاون کے مختلف موقعوں کے متمنی اور منتظر ہیں۔ وزیر پٹرولیم دھرمیندر پردھان اور نیتی آیوگ کے چیرمین راجیوکمار نے توانائی کے شعبہ میں کئے گئے مختلف اقدامات کا خاکہ پیش کیا۔

TOPPOPULARRECENT