Thursday , September 21 2017
Home / دنیا / ہندوستانی فوج کی ’’پرتشدد‘‘ کارروائی میں چینی سپاہی زخمی :بیجنگ

ہندوستانی فوج کی ’’پرتشدد‘‘ کارروائی میں چینی سپاہی زخمی :بیجنگ

بیجنگ ۔21 اگسٹ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) چین نے ہندوستانی سپاہیوں پر اس ( چین) کے سپاہیوں کے خلاف 15 اگسٹ کو لداخ کی پانگونگ جھیل پر تعطل و صف آرائی کے دوران پرتشدد کارروائی کرنے کا آج الزام عائد کیا ۔ اس واقعہ کے دوران دونوں ملکوں کے سپاہیوں کے درمیان ہاتھا پائی ہوگئی تھی اور دونوں نے ایک دوسرے پر پتھراؤ بھی کیا تھا۔ چین نے اس واقعہ کے خلاف ہندوستان سے آج احتجاج بھی کیاہے ۔ واضح رہے کہ ہندوستای سرحدی گارڈز نے لداخ کے ہندوستانی علاقہ میں درانداز کرنے والے چینی سپاہیوں کی ایک کوشش کو ناکام بنادیا تھا ۔ اس دوران دونوں ملکوں کے سپاہیوں میں دھکم پیل ہوگئی تھی اور ایک دوسرے پر سنگباری کے نتیجہ میں دونوں جانب چند سپاہی زخمی بھی ہوئے تھے چینی وزارت خارجہ کی ترجمان ہواچن اینگ نے دعویٰ کیا کہ یہ واقعہ اُس وقت پیش آیا جب 15 اگسٹ کو جھیل کے قریب چینی سرحدی سپاہی خطِ حقیقی قبضہ ( ایل اے سی ) پہر چینی جانب اپنے علاقہ میں معمول کے مطابق گشت کررہے تھے ۔ انھوں نے مزید دعویٰ کیا کہ اس عمل کے دوران ہندوستانی جانب سے چند پرتشدد کارروائیاں کی تھیں اور چینی سرحدی اہلکار زخمی ہوگئے تھے ‘‘ ۔ ہندوستان نے کہاہے کہ دونوں جانب کے علاقائی کمانڈروں نے اس واقعہ پر تبادلۂ خیال کیا ہے۔ ہواچن اپنگ نے کہاکہ ’’چین نے اس واقعہ پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے ہندوستان سے سخت نمائندگی کی ہے ۔ سکم سکشن کے ڈوکلام علاقہ میں دونوں ملکوں کے مابین تین ماہ سے جاری تعطل کے درمیان لداخ کی پانگونگ جھیل کے قریب 15 اگسٹ کو دونوں ملکوں کے سرحدی گارڈز کی جھڑپ اور سنگباری کا واقعہ پیش آیا تھا ۔ چین کا الزام ہے کہ ہندوستانی سپاہیوں نے ڈوکلام کے چینی علاقہ میں غیرقانونی دخل اندازی کی ہے ۔ اور انھیں غیرمشروط طورپر وہاں سے واپس چلے جانا چاہئے ۔ ہندوستان نے گزشتہ ہفتہ کہا تھا کہ ڈوکلام تعطل کے باہمی طورپر قابل قبول حل کی تلاش کیلئے وہ ( ہند) چین کے ساتھ بدستور بات چیت جاری رکھنا چاہتا ہے لیکن یہ بھی واضح کردیا تھا کہ لداخ میں پیش آئے جیسے واقعات دونوں جانب کے مفاد میں نہیں ہیں ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT