Thursday , June 29 2017
Home / Top Stories / ہندوستان اور پاکستان کے درمیان آج چیمپئنزٹرافی کا فائنل

ہندوستان اور پاکستان کے درمیان آج چیمپئنزٹرافی کا فائنل

 

لندن۔17جون (سیاست ڈاٹ کام) کرکٹ کی تاریخ کے دو سب سے بڑے حریف ہندستان اور پاکستان کل یہاںجب آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی کے خطابی مقابلے کے لئے میدان میں اتریں گے تب نہ صرف دونوں ٹیموں کے درمیان وقار کی جنگ ہوگی بلکہ دونوں ممالک کے لوگوں کے درمیان جذبات کی سونامی اٹھے گی۔ چیمپئنز ٹرافی شروع ہونے کے وقت کسی نے بھی یہ تصور نہیں کیا تھا کہ ہندستان اور پاکستان فائنل میں آمنے سامنے ہوں گے ۔ دونوں ممالک کا گروپ میچ شروع ہونے سے کئی ماہ پہلے ہی ہاؤس فل ہو چکا تھا اور اب تو دونوں کے درمیان فائنل کی مہم جوئی سر چڑھ کر بولے گی۔ ہندستان ،چیمپئنز ٹرافی کا گزشتہ فاتح اور مسلسل دوسری مرتبہ فائنل میں پہنچا ہے ۔ پاکستان کی ٹیم اپنے پہلے میچ میں ہندستان سے شکست کا سامنا کرنے کے بعد حیرت انگیز کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے فائنل میں پہنچی ہے ۔ پاکستان کا یہ پہلا فائنل ہے ۔ دونوں ٹیمیں آئی سی سی ٹورنامنٹوں کی تاریخ میں دوسری مرتبہ فائنل میں آمنے سامنے ہوں گی۔ اس سے پہلے دونوں کے درمیان 2007 کے ٹوئنٹی20 ورلڈ کپ کے فائنل میں مقابلہ ہوا تھا جہاں ہندوستان نے خطاب حاصل کیا تھا۔ ہندستان اور پاکستان کے درمیان فائنل میں دونوں ممالک کے کروڑوں شائقین کی سانسیں تھمی رہیں گي اور ٹیم انڈیا کے کپتان ویراٹ کوہلی اور پاکستانی کپتان سرفراز احمد پر دباؤ بنا رہے گا، جب تک میچ کا فیصلہ نہ ہو جائے ۔

دونوں ہی ٹیموں کے لئے یہ مقابلہ کرو یا مرو سے کم نہیں ہو گا کیونکہ کسی بھی ٹیم کو خطاب سے کچھ کم منظور نہیں ہو گا۔ہندوستانی ٹیم بنگلہ دیش کو ایجبسٹن میں نو وکٹ سے شکست دے کر اور پاکستان میزبان انگلینڈ کو کارڈف میں آٹھ وکٹ سے شکست دے کر فائنل میں پہنچے ہیں۔ ہندستان اور پاکستان کے درمیان خطابی مقابلہ بین الاقوامی کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کے لئے کسی بلاک بسٹر سے کم نہیں ہوگا۔ دونوں ٹیموں کے درمیان گروپ مقابلے کو ٹی وی پر20.1 کروڑ لوگوں نے دیکھا تھا جو بي اے آرسي کی تاریخ میں سب سے زیادہ ریٹڈ ونڈے میچ ہے اور فائنل میں یہ ریکارڈ ٹوٹ سکتا ہے ۔ہندستان کو خطاب بچانے کی امیدیں اس کے تین ٹاپ بیٹسمینوں شکھر دھون، روہت شرما اور کپتان کوہلی پر ٹکی رہیں گی۔ آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی کے چیمپئن دھون نے اس ٹورنمنٹ میں79.25 کے اوسط سے سب سے زیادہ317 رنز بنائے ہیں جبکہ روہت 101.33 کے اوسط سے 304 رنز اور کوہلی 253.00 کی اوسط سے253 رن۔ بنا چکے ہیں۔ کوہلی چار اننگز میں اب تک صرف ایک مرتبہ آؤٹ ہوئے ہیں۔ پاکستان کے لئے اظہر علی نے 169، فخر زمان نے 138، محمد حفیظ نے 91 اور بابر اعظم نے87 رنز بنائے ہیں۔ دونوں ٹیموں کے درمیان کا فاصلہ ان اعداد و شمار سے واضح ہو جاتا ہے لیکن جب بات فائنل کی ہو تو فائنل دباؤ ہمیشہ بیٹسمینوں پر بھاری پڑتا ہے ۔ ایسے وقت میں جو دباؤ کو برداشت کرتا ہے وہی فاتح ثابت ہوتا ہے ۔ہندستان کے ٹاپ آرڈر کی طرح پاکستان کی فاسٹ بولنگ شعبہ بھی زبردست ہے جس نے اپنے بل بوتے پر پاکستان کو فائنل میں پہنچایا ہے ۔ حسن علی 10 وکٹ لے چکے ہیں اور سب سے زیادہ وکٹ لینے والوں کی فہرست میں پہلے مقام پر ہیں۔ جنید خان نے سات وکٹ لئے ہیں اور یہ بولروں کی جوڑی فائنل میں بہت خطرناک ثابت ہو سکتی ہے ۔ فائنل کے لئے فاسٹ بولر محمد عامر فٹ ہوگئے ہیں ۔ ہندستانی بولنگ شعبے پر نظر ڈالیں تو بھونیشور کمار اور جسپریت بمراہ کی بولنگ شاندار رہی ہے ۔ بھونیشور نے چھ اور بمراہ نے چار وکٹ لئے ہیں۔ اسپنر رویندر جڈیجہ نے بھی چار وکٹ حاصل کئے ہیں۔ جڈیجہ کے ساتھ فائنل میں آف اسپنر روی چندرن اشون کا بھی اہم کردار رہے گا۔ کیدار جادھو کو بھی نظر انداز نہیں کیا جا سکتا جنہوں نے بنگلہ دیش کے دو اہم وکٹ گراکر ہندستان کا کام آسان کیا تھا۔ آل راؤنڈر ہاردک پانڈیا بھی مفید ثابت ہوئے ہیں، لیکن انہیں بولنگ میں بہتر کارکردگی پیش کرنا ہوگی۔
مقابلے کاآغازسہ پہر3.00 بجے ہوگا

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT