Wednesday , August 23 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ہندوستان سے مسلمانوں کی اٹوٹ وابستگی

ہندوستان سے مسلمانوں کی اٹوٹ وابستگی

ظہیرآباد میں جلسہ ، مولانا غیاث احمد رشادی اور مولانا محمد فصیح الدین ندوی کا خطاب
ظہیرآباد  /17 اگست ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) مولانا غیاث احمد رشادی مرکزی صدر صفاء بیت المال نے یہاں یونائیٹیڈ فنکشن ہال میں صفاء بیت المال شاخ ظہیرآباد کے زیر اہتمام ’’دیش کی آزادی میں ہمارا کردار‘‘ کے زیر عنوان منعقدہ اجلاس عام کے کے شکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان سے مسلمانوں کا رشتہ اٹوٹ ہے جو قیامت تک نہیں ٹوٹے گا جبکہ ملک کے تحفظ ، اس کی جمہویت کی بقاء اور قومی یکجہتی کی برقراری کیلئے مسلمانوں کو آگے آنا ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ یہ ملک کوئی معمولی ملک نہیں ہے ۔ اس ملک سے مسلمانوں کا رشتہ صدیوں پرانا ہے ۔ دنیا کے سب سے پہلے انسان حضرت آدم اور ان کی شریک حیات حضرت حوا جنت سے علی الترتیب سراندیپ ( ہندوستان) اور جدہ ( سعودی عرب ) میں اتارے گئے تھے ۔ بعد ازاں حضرت آدم نے تین سو برس کی مفارقت کے بعد 9 ذی الحجہ کی علی الصبح مکہ شریف کے مقام مزدولفہ میں حضرت حوا سے ملاقات کی تھی ۔ انہو ںنے یاد دلایا کہ جنوبی ہندوستان کے کیرالا کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ اس کے ایک غیر مسلم بادشاہ نے سرور کونین ﷺ کے شق القمر کے معجزہ کا منظر اپنی آنکھوں سے دیکھا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ اس حقیقت سے کوئی انکار کرنے کی جرائت نہیں کرسکتا کہ ہندوستانی مسلمانوں کی 362 سالہ قربانیوں سے تاریخ ہند کے اوراق بھرے ہوئے ہیں ۔ ہندوستانی مسلمان وہ قوم ہے جس نے ہندوستان کو جنت نشان بنانے میں اپنا خون جگر دیا ہے ۔ آزاد ہندوستان کے وزرائے اعظم کو ہر سال یوم آزادی کے موقع پر اپنی قوم سے خطاب کرنے کیلئے لال قلعہ عطا کیا ہے ۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ ہندوستان کا بٹوارہ ایک بڑی تاریخی غلطی تھی جس کے سبب آزاد سرزمین ہند میں جینے اور مرنے پر آزادہ ہندوستانی مسلمان اقلیت میں آکر جمہوری ملک کے ترقی کے دھارے میں شامل ہونے سے محروم ہوگئے ۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی موجودہ فضاء اگرچیکہ مذہبی منافرت کے سبب آلودہ ہے تاہم اسے پاک کیا  جاسکتا ہے اور یہ اسی وقت ممکن ہے جبکہ ہندوستانی مسلمان سرور کونین ﷺ اور ان کے صحابہ کرامؓ کے اسوہ حسنہ کو اپنائیں ۔ مولانا محمد فصیح الدین ندوی سکریٹری مرکزی صفاء بیت المال نے کہا کہ مسلم حکمرانوں نے ملک کو معاشی اعتبار سے اس طرح مستحکم کیا تھا کہ دنیا کے ممالک نے اس کو سونے کی چڑیا سے موسوم کردیا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان اس ملک کو لوٹنے کی غرض سے نہیں آئے تھے بلکہ اس کو اپنا وطن بناتے ہوئے ترقی اور خوشحالی کی سمت گامزن کرنے آئے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ اس کو اپنا وطن بناتے ہوئے ترقی اور خوشحالی کی سمت گامزن کرنے آئے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ قدرتی وسائل سے مالامال ہندوستان پر غاضبانہ قبضہ کے مذموم منصوبہ کے تحت انگریزی تجارت کے عنوان سے 1600 ء میں سرزمین ہند پر اپنے ناپاک قدم رکھے اور اپنی شاطرانہ چالوں اور سازشی حربوں کے ذریعہ آخر کار اپنے مفسدانہ عزائم کی تکمیل کی ۔ انہوں نے اپنے طویل خطاب کے دوران ملک میں مسلم شاہی حکمرانوں سے لے کر انگریزوں کے اقتدار تک کے سارے واقعدات تفصیل کے ساتھ بیان کیا ۔ انہوں نے ہندوستان کی آزادی کیلئے جدوجہد کرنے والے اور اپنی جانوں کو قربانی دینے والے علماء کرام شاہ ولی اللہ محدث دہلویؒ شاہ عبدالعزیز دہلویؒ ، شاہ رفیع الدین دہلویؒ ، شاہ عبدالقادر دہلویؒ ، شاہ سید احمد شہیدؒ ، شاہ اسمعیل شہیدؒ ، رشید احمد گنگوہی اور دیگر کے کارہائے نمایاں کو پیش کیا ۔ انہوں نے بنگال کے نواب سراج ا لدولہ ، آخر مغل حکمران بہادر شاہ ظفر اور سلطنت خداداد حکمران ٹیپو سلطان شہیدؒ کی جانب سے ملک کی آزادی کیلئے کی گئی لڑائیوں کا بھی تذکرہ کیا ۔ انہوں نے 1857 ء کے غدر کے واقعات پر بھی روشنی ڈالی اور کہا کہ انگریزی راج سے چھٹکارا دلانے کیلئے 5 لاکھ مسلمانوں اور 50 ہزار سے زائد علماء کرام نے جام شہادت نوش کیا ۔ انہوں نے بیسوی صدی کے آغاز میں مولانا ابوالحسن دیوبندی کی جانب سے آزادی کئے گئے جرائتمندانہ اقدامات سے بھی شرکاء کو واقف کرایا ۔ انہوں نے اپنے تعلق کو قرآن سے جوڑنے اور آپس میں متحد ہوجانے کی مسلمانوں کو تلقین کی ۔ ایس آئی ظہیرآباد مسٹر کے سبھاش نے صفاء بیت المال کی فلاحی خدمات کی ستائش کی ۔ جناب سید شاہ عبدالعزیز قادری اور عبدالمجید قاسمی نے بھی خطاب کیا ۔ مولانا عتیق احمد قاسمی صدر بیت المال ظہیرآباد نے بیت المال کی کارکردگی پر روشنی ڈالی ۔ مولانا محمد حمایت رشادی کی تلاوت کلام پاک سے اجلاس عام کا آغاز ہوا ۔ جبکہ اختتام سید شاہ عبدالعزیز قادری کے دعائیہ کلمات سے عمل میں آیا ۔ نظامت کے فرائض مفتی محمد نذیر احمد نے انجام دئے ۔ جبکہ حافظ محمد لئیق احمد نے بارگاہ رسالت مآب میں نعت کا ہدیہ پیش کیا ۔ اس موقع پر سینکڑوں کی تعداد میں مسلمانوں نے شرکت کی ۔

TOPPOPULARRECENT