Friday , April 28 2017
Home / Top Stories / ہندوستان میں امیر اور غریب میں فرق بڑھ رہا ہے: سروے

ہندوستان میں امیر اور غریب میں فرق بڑھ رہا ہے: سروے

ممبئی۔23 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) اگرچہ کہ ہندوستان میں دھن دولت بڑھتی جارہی ہے لیکن امیر اور غریب کے درمیان امتیاز اور خلیج میں اضافہ ہورہا ہے۔ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ ہندوستان، غربت کے سمندر میں خوشحالی کا جزیرہ بن گیا ہے۔ عالمی سطح پر دولت کا احتساب اور تجزیہ کرنے والی کمیٹی نے بتایا ہے کہ ہندوستان میں 96 فیصد شرح ترقی نوجوانوں پر منحصر ہے۔ جبکہ 86 فیصد دولت کا چلن جائیدادوں اور رئیل اسٹیٹ شعبہ میں ہے۔ گلوبل فینانشیل سرویس کی رپورٹ کے مطابق ہندوستان میں 2016 ء تک مقامی کرنسی کے استعمال میں 51 فیصد تک اضافہ ہوگیا ہے لیکن اچانک نوٹوں کے تبادلہ کی وجہ سے گھریلو آمدنی 0.8 فیصد تک گھٹ گئی ہے۔ جوکہ ڈالر میں 3 ٹرلین ہوئی ہے جبکہ ایک نوجوان کی سالانہ شرح ترقی سال 2000 اور 2016 ء کے درمیان اوسطاً 6 فیصد رہی۔ گو کہ ہندوستان میں دولت کا انبار بڑھتا جارہا ہے لیکن نوجوانوں کی اکثریت محرومیوں کی زندگی گزاررہی ہے جن کی آمدنی 10 ہزار سے بھی کم ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ ہندوستان میں کروڑپتی افراد 973 بلین دولت کے ساتھ 1.78 لاکھ فلیٹس میں قیام پذیر ہیں تو دولتیوں میں 5.2 فیصد سے 2,260 تک اضافہ ہوا ہے جس میں 1,040 افراد کی دولت 100 ملین ڈالر ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ آئندہ 5 سال میں کروڑپتی افراد 2.8 لاکھ (9.5 فیصد) تک پہنچ جائے گی۔ دریں اثناء ہندوستان میں شخصی قرضہ داروں کی تعداد 9 فیصد تک ہوگئی ہے جو کہ ترقی یافتہ ممالک کے مقابل انتہائی کم ہے۔ جبکہ سال 2016ء میں معاشی ترقی محدود رہی تاہم 2008 ء میں عالمی معاشی بحران سے قبل شرح ترقی میں انحطاط پذیر تھی لیکن سال 2013 ء سے ترقی کا رجحان مضبوط ہونے لگا۔ سال 2016ء میں عالمی دولت 14 فیصد یا 3.5 ٹرلین ڈالر تھی اور عالمی سطح نوجوانوں کی آبادی کے مطابق یہ دولت 256 ٹرلین تک پہنچ گئی ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT