Saturday , October 21 2017
Home / دنیا / ہندوستان میں حقوق انسانی اور مذہبی آزادی کی صورتحال ابتر

ہندوستان میں حقوق انسانی اور مذہبی آزادی کی صورتحال ابتر

واشنگٹن۔9 جون (سیاست ڈاٹ کام) مودی حکومت کے دو سال کے دوران ہندوستان میں حقوق انسانی اور مذہبی آزادی کی صورتحال انتہائی ابتر ہوچکی ہے۔ ہیومن رائٹس واچ کے ایشیاء ایڈوکیسی ڈائرکٹر جان سفٹان نے امریکہ پر زور دیا ہے کہ وہ ہندوستان کے ساتھ مذاکرات کے عمل میں ان مسائل کو بھی شامل کرے۔ انہوں نے کہا کہ جب تک مودی انتظامیہ کی جانب سے موثر اقدامات نہیں کئے جاتے اور انصاف رسانی کو یقینی نہیں بنایا جاتا تب تک ہندوستان میں حقوق انسانی کی صورتحال میں کوئی نمایاں تبدیلی کا امکان نہیں ہے۔ ضرورت اس بات کی ہے کہ تمام شہریوں کو جوابدہ بنایا جائے اور حساس طبقات کا تحفظ یقینی بنایا جائے۔ اس کے علاوہ مختلف نظریات اور ناراضگیوں کے اظہار کی آزادی کا تحفظ بھی یقینی بنایا جائے۔ سفٹان نے ٹام لینٹوس ہیومن رائٹس کمیشن کے زیر اہتمام ’’چیلنجس اور مواقع: ہندوستان میں حقوق انسانی کی پیشرفت‘‘ پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قوانین اور پالیسیوں پر عمل آوری کے فقدان کی وجہ سے یہاں کی صورتحال مسلسل ایک چیلنج بنی ہوئی ہے۔ سرکاری عہدیداروں کو جوابدہ نہیں بنایا جاتا۔ پولیس اور دیگر سکیوریٹی عملہ قانون کے سہارے خود کو محفوظ؍ سمجھتا ہے اور ان کے خلاف سنگین انسانی حقوق کی خلاف ورزی پر بھی کوئی قانونی چارہ جوئی نہیں کی جاتی۔

TOPPOPULARRECENT