Sunday , May 28 2017
Home / Top Stories / ’’ہندوستان میں پاگل ہوجائیں گے‘‘

’’ہندوستان میں پاگل ہوجائیں گے‘‘

میڈ اِن انڈیا اسکیم پر صنعت کار راجیو بجاج کا طنز

ممبئی 16 فروری (سیاست ڈاٹ کام) مرکز کی اختراعی اسکیم ’’میڈ اِن انڈیا‘‘ میں حائل رکاوٹوں سے بدظن صنعتکار روی بجاج نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ یہ اسکیم دراصل “Mad in India” ہے یعنی یہ ’’ہمیں پاگل کردے گی‘‘۔ بجاج کمپنی ہندوستان میں 4 پہیوں والی سیکل متعارف کرنے کا منصوبہ رکھتی ہے لیکن اِس اختراعی اسکیم کے نام پر ریگولیٹری ایجنسیوں کی بے شمار رکاوٹوں کا اُسے سامنا ہے۔ بجاج آٹو کے منیجنگ ڈائرکٹر راجیو بجاج نے یہاں ایک پروگرام میں کہاکہ اگر آپ کی اختراعی اسکیمات کا انحصار حکومت کی منظوری یا عدالتی عمل پر منحصر رہے تو پھر یہ ’’میڈ اِن انڈیا‘‘ نہیں بلکہ ’’میاڈ اِن انڈیا‘‘ ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ 5 سال سے ہم مسلسل جدوجہد کررہے ہیں لیکن اب تک بھی ہمیں ملک میں فور وہیلر فروخت کرنے کی اجازت نہیں ملی ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ یہ Quadri – Cycle یوروپ، ایشیاء اور لاطینی امریکہ کے کئی ممالک میں فروخت کی جارہی ہے۔ اُنھوں نے یہ جاننا چاہا کہ ایک ایسی سواری جو بالکل محفوظ، آلودگی نہ پھیلانے والی اور کسی طرح کی مشکلات نہ کھڑی کرنے والی ہے، اِس کی منظوری میں آخر ہمیں کیوں مشکل پیش آرہی ہے۔ ہندوستان ہی ایک ایسا ملک ہے جس نے یہ گاڑی فروخت کرنے کی اجازت نہیں دی ہے۔ واضح رہے کہ بجاج دنیا بھر میں سب سے زیادہ تھری وہیلر فروخت کرنے والی کمپنی ہے اور اُسے منفرد چار پہیوں کی گاڑی شروع کرنے میں بے شمار رکاوٹوں کا سامنا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT