Thursday , September 21 2017
Home / Top Stories / ہندوستان نے داعش کے خطرات سے آگاہ کردیا تھا

ہندوستان نے داعش کے خطرات سے آگاہ کردیا تھا

ہندوستانی سیکوریٹی ایجنسیوں نے ٹھوس اقدامات کئے ہیں ، مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ کا بیان
نئی دہلی ۔ 17 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ نے پیرس میں دہشت گرد حملوں کے تعلق سے کہا کہ ہندوستان نے دہشت گرد گروپس دولت اسلامیہ کے لاحق خطرات سے پہلے ہی آگاہ کردیا تھا۔ آئی ایس آئی ایس کسی ایک ملک کیلئے خطرہ نہیں ہے بلکہ پوری دنیا کیلئے خطرہ ہے۔ ہندوستان آئی ایس آئی ایس کے بارے میں پہلے ہی الرٹ کرچکا ہے۔ یہاں ایک تقریب کے دوران اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ داعش کے خلاف منظم کارروائی کی جانی چاہئے۔ پیرس میں سلسلہ وار دہشت گرد حملوں اور کنسرٹ جانے والے افراد کو نشانہ بنانا ساکر شائقین اور فرائیڈے نائیٹ کا لطف لینے والے افراد پر حملے کرتے ہوئے داعش نے 129 افراد کو ہلاک کیا تھا۔ فرانس نیشنل اسٹیڈیم کے قریب کم از کم دو دھماکے ہوئے تھے جہاں پر فرانس ۔ جرمنی دوستانہ ساکر میچ کھیلا جارہا تھا۔ اس میچ کو دیکھنے کیلئے صدر فرانس فرائنکوئس ہالینڈ بھی موجود تھے۔ حملوں کے بعد صدر فرانس نے ایمرجنسی کا اعلان کیا اور ملک کی سرحدوں کو بند کرنے کی ہدایت دی۔

ہندوستانی سیکوریٹی ایجنسیوں نے پہلے ہی اطلاع دی تھی کہ تقریباً 20 ہندوستانی نوجوان اس وقت شام اور عراق میں آئی ایس آئی ایس کے لئے لڑ رہے ہیں۔ ان میں دو نوجوانوں کا تعلق ممبئی کے مضافاتی علاقہ کلیان سے ہے۔ ایک آسٹریلیا نژاد شہری کشمیری ہے اور ایک تلنگانہ سے تعلق رکھنے والا نوجوان ہے۔ ایک کا تعلق کرناٹک سے اور ایک کا تعلق اومانی نژاد ہندوستانی ہے۔ دوسرے کا تعلق سنگاپوری نژاد ہندوستانی ہے۔ گذشتہ سال کلیان سے تعلق رکھنے والا ایک نوجوان ہندوستان واپس ہوا۔ پچھلے 6 ماہ تک وہ آئی ایس آئی کے پاس تربیت حاصل کررہا تھا۔ ممبئی پہنچتے ہی اسے گرفتار کیا گیا۔ 6 ہندوستانیوں میں جنہوں نے آئی ایس آئی ایس کے ساتھ لڑائی میں حصہ لیا تھا، ہلاک ہوگئے جبکہ تین انڈین مجاہدین دہشت گردوں میں سلطان اجمیر شاہ اور بڑا ساجد شامل ہیں۔ یہ تمام پاکستان پہنچنے کے بعد داعش میں شامل ہوئے تھے۔ ان دو کا تعلق مہاراشٹرا اور ایک کا تعلق تلنگانہ سے ہے۔ 15 ستمبر کو یو اے ای میں آئی ایس آئی ایس کے ساتھ وابستگی کے شبہ پر 4 ہندوستانیوں کو ملک بدر کردیا گیا۔ یو اے ای میں ایک 37 سالہ خاتون افشاں جبین کو بھی ہندوستان واپس بھیج دیا تھا جو آئی ایس آئی ایس کیلئے نوجوانوں کی بھرتی کرانے کے کام میں مصروف تھی۔ جنوری میں حیدرآباد کے سلمان محی الدین کو حیدرآباد ایرپورٹ سے گرفتار کیا گیا جب وہ ترکی کے ذریعہ شام پہنچ کر لڑائی میں حصہ لیا تھا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT