Tuesday , June 27 2017
Home / Top Stories / ہندوستان کا سب سے وزنی راکٹ GSAT-19 خلاء میں چھوڑ دیا گیا

ہندوستان کا سب سے وزنی راکٹ GSAT-19 خلاء میں چھوڑ دیا گیا

قومی خلائی سائنس میں اسرو نے ایک نئی تاریخ درج کی، صدر، وزیراعظم کی مبارکباد

سری ہری کوٹہ (اے پی) ۔ 5 جون (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان نے مواصلاتی سٹلائیٹ GSAT-19 کو لے جانے والے اپنے انتہائی وزنی راکٹ جی ایس ایل وی HKIII-DI کو کامیابی کے ساتھ خلاء میں چھوڑتے ہوئے ایک نئی تاریخ درج کی ہے۔ ستیش دھون خلائی مرکز کے دوسرے لانچ پیاڈ سے آج شام 5:28 بجے 43-43 میٹر اونچا راکٹ چھوڑا گیا، جس کا وزن 3,136 کیلو گرام ہے۔ اس ملک کی طرف سے چھوڑا جانے والے راکٹوں میں اب تک کا سب سے وزنی را کٹ GSAT-19 ، 16 منٹ بعد مدار میں داخل ہوگیا ۔اس تاریخ ساز کارنامہ پر بے پناہ خوشی سے سرشار ہندوستانی خلائی تحقیقی ادارہ (اسرو) چیریٹی اے ایس کرن کمار نے کہا کہ ’’یہ تاریخی دن ہے‘‘ اور جی ایس ایل وی HKIII D-1 نے GSAT-19 کو مطلوبہ
مواد میں چھوڑتے ہوئے اپنی صلاحیتوں کا کامیاب مظاہرہ کیا۔ کرن کمار نے کہا کہ ’’پہلی ہی کوشش میں یہ ایک عظیم کامیابی حاصل ہوئی اور جی ایس ایل وی HKIII نے GSAT-19 کو مطلوبہ مدار میں پہنچا دیا‘‘۔ جی سیٹ ۔ 19 مستقبل کی نسل کا سٹلائیٹ ہے۔ کرن کمار نے کہا کہ ’’میں ساری ٹیم کو مبارکباد دینا چاہتا ہوں جس نے 2002ء سے آج کی اس پرواز کیلئے ہر دن بے تھکان محنت کی تھی‘‘۔ صدرجمہوریہ پرنب مکرجی نے مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ یہ کارنامہ ساری قوم کیلئے قابل فخر ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی نے اس کامیابی پر مبارکباد دی ہے اور کہا کہ آئندہ نسل کی سٹلائیٹ صلاحیتوں کی سمت ہندوستان مزید قریب پہنچ گیا ہے۔ وزیراعظم نے خلائی محکمہ کے سکریٹری اور ’اسرور‘ کے چیرمین سے فون پر بات کرتے ہوئے اس تاریخی کامیابی پر مبارکباد دی۔ کانگریس کی صدر سونیا گاندھی نے مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ یہ مزید ایک نمایاں کامیابی ہے جس پر ہندوستانی قوم فخر کرسکتی ہے۔ سونیا گاندھی نے کہا کہ اسرو نے خلائی سائنس میں غیرمعمولی کارکردگی اور مہارت کی روایت کو برقرار رکھا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT