Saturday , July 22 2017
Home / دنیا / ہندوستان کا نیوکلیائی جدید کاری پروگرام چین پر مرکوز:امریکی رپورٹ

ہندوستان کا نیوکلیائی جدید کاری پروگرام چین پر مرکوز:امریکی رپورٹ

واشنگٹن، 14جولائی (سیاست ڈاٹ کام) امریکی ماہرین کا ماننا ہے کہ سرحدی تنازعات پر چین کیساتھ ہندوستان کے تلخ رشتوں کے مدنظر ہندوستان کے نیوکلیائی جدیدکاری پروگرام سے اشارے ملتے ہیں کہ مستقبل میں اس کی ساری توجہ چین کے ساتھ اسٹریٹیجک تعلقات پر مرکوز رہے گی۔بلیٹن آف دی اٹامک سائنٹسٹ نامی جرنل میں امریکی ماہرین ہانس ایم کرسٹنسن اور رابرٹ ایس نوریس نے کہا کہ روایتی طورپرہندوستان کی نیوکلیائی سیاست ابتدا سے ہی پاکستان پر مرکوز رہی ہے لیکن اب ایسا محسوس ہوتا ہیکہ وہ چین پر توجہ مرکوز دینے پر زیادہ زور دے رہا ہے ۔ کرسٹنسن فیڈریشن آف امریکن سانٹسٹ میں نیوکلیائی انفارمیشن پروجیکٹ کے ڈائریکٹر ہیں اور رابرٹ ایس نوریس واشنگٹن ڈی سی میں فیڈریشن آف امریکن سائنٹسٹ کے سینئر رکن ہیں۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ زمین سے مار کرنے والی چار موجودہ نیوکلیائی صلاحیت والی بالسٹک میزائلوں کے علاوہ ہندوستانی سائنس داں دو دیگر طویل دوری تک مار کرنے کی صلاحیت والی دیگر دو میزائلوں اگنی 4 اور اگنی 5 پر کام کررہے ہیں۔ اگنی 4 میزائل شمال مشرقی ہندوتان سے چین کے تمام بڑے شہروں (بیجنگ ، شنگھائی) کو نشانہ بنانے کا اہل ہوگا لیکن سائنس تین مرحلوں والی ٹھوس ایندھن ، ریل ۔ موبائل ، طویل دوری تک مار کرنے کی صلاحیت والے اگنی 5 انٹرکانٹینینٹل بالسٹک میزائل کے ڈیولپمنٹ پر کام کررہے ہیں جو پانچ ہزار کلومیٹر سے زیادہ دوری تک اپنے ہدف کو نشانہ بنانے کا اہل ہے ۔اس رپورٹ میں انڈین نیوکلے ئر فورسیز 2017میں کہا گیا ہے کہ ہندوستان میں 150 سے 200کے درمیان نیوکلیائی ہتھیاروں کے لئے ضروری پلوٹونیم تیار کرلیا ہے اور ابھی تک 120 سے 130 نیوکلیائی ہتھیار بنالینے کا امکان ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT