Friday , August 18 2017
Home / Top Stories / ہندوستان کبھی عدم روادارنہیں رہا، نہ رہے گا

ہندوستان کبھی عدم روادارنہیں رہا، نہ رہے گا

ریاستوں میں ہونے والے جرائم کیلئے مرکز کو ذمہ دار قرار نہیں دیا جاسکتا ، مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی کا اظہار خیال
نئی دہلی 3 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) یہ واضح کرتے ہوئے کہ ہندوستان کبھی بھی عدم روادار نہیں رہ سکتا وزیر فینانس ارون جیٹلی نے اس مسئلہ پر کانگریس کی تنقیدوں کو مسترد کردیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مخالفین کو چاہئے کہ وہ سیاسی لڑائی سیاسی اعتبار سے ہی لڑیں۔ انہوں نے حیرانی سے سوال کیا کہ ’’ عدم رواداری کہاں ہے ‘‘ ۔ حالیہ کچھ واقعات بشمول بیف مسئلہ کو یکا دوکا قرار دیتے ہوئے جیٹلی نے یہ اصرار کیا کہ ایوارڈز واپس کرنے کا کوئی جواز نہیں ہوسکتا اور قومی سطح پر صورتحال بالکل پرامن ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان ایک فراخدل جمہوریت سے ایک پرامن بقائے باہم کے اصول کا مکمل پابند ہے ۔ بی جے پی لیڈر نے کہا کہ ملک میں ہم آہنگی کا ماحول ہے ۔ ملک کبھی بھی عدم روادار نہیں رہا ہے اور نہ کبھی رہے گا ۔ مسٹر جیٹلی سے کانگریس کی جانب سے عدم رواداری کے مسئلہ پر صدر جمہوریہ تک مارچ اور بائیں بازو کے دانشوروں کی جانب سے ایک سمینار کے اہتمام سے متعلق سوالات کئے گئے تھے ۔ یہ واضح کرتے ہوئے کہ سیاسی مخالفین کو چاہئے کہ وہ سیاسی لڑائی سیاسی اعتبار سے ہی لڑیں وزیر فینانس نے کہا کہ سیاسی وجوہات کی بنا پر کوئی مسئلہ پیدا کرنا منصفانہ عمل نہیں ہے اور اس کو حکومت سے نہیں جوڑا جانا چاہئے ۔ خاص طور پر اسلئے بھی کہ جن ریاستوںمیں ایسے واقعات پیش آ رہے ہیں وہ دوسری جماعتوں کے اقتدار میں ہیں ۔ انہوں نے سوال کیا کہ عدم رواداری کہاں ہے ؟ ۔

ہندوستان کی ایک متحرک جمہوریت ہے ۔ صرف بات چیت سے ماحول نہیں بدلے گا ۔ اگر کوئی واقعہ کرناٹک میں پیش آتا ہے جہاں کانگریس کی حکومت ہے تو آپ اس کو مرکزی حکومت سے نہیں جوڑسکتے ۔ یہ منصفانہ نہیںہے ۔ انہوں نے کہا کہ ایسا کرنا جرم ہے اور جو کوئی جرم کرتا ہے اس کے خلاف کارروائی ہونی چاہئے ۔ اسی لئے لوگ جو ملک کے قومی دھارے میں ہیں اس کی مخالفت کرتے ہیں۔ بی جے پی اور کانگریس کے مابین سماج میں بڑھتی ہوئی عدم رواداری کے مسئلہ پر رسہ کشی چل رہی ہے ۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے کل ہی اس مسئلہ پر کہا تھا کہ کانگریس صدر کو رواداری کے مسئلہ پر این ڈی اے کو لیکچر دینے کی ضرورت نہیں ہے اور کانگریس کو چاہئے کہ وہ 1984 کے مخالف سکھ فسادات پر شرم محسوس کرے ۔ کانگریس کی صدر سونیا گاندھی نے اس مسئلہ پر کل صدر پرنب مکرجی سے ملاقات کی تھی اور آج پارٹی کی حجانب سے راشٹرپتی بھون تک مارچ کا اہتمام کیا گیا ہے ۔ ارون جیٹلی نے اس یقین کا اظہار کیا کہ عدم رواداری کے مسئلہ کا انٹرنیشنل فلم فیسٹول پر کوئی اثر نہیں ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ کسی گوشہ کی جانب سے اس پروگرام کو متاثر کرنے کی کوشش نہیں ہوسکتی ۔ یہ اچھی روایت نہیں ہے ۔ اس سوال پر کہ آیا حکومت ایوارڈ واپس کرنے والے فلمسازوں سے بات کر رہی ہے جیٹلی نے کہا کہ جب ملک میں امن کا ماحول ہے تو ایوارڈز واپس کرنے کا کیا جواز ہے ۔ ایوارڈز واپس کرنے کا کوئی جواز نہیں ہوسکتا ۔ انہوں نے کہا کہ مذہبی عدم رواداری اور غیر سکیولر ہونا ایک محب وطن شہری کا سب سے بڑا جرم ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں کوئی بھی ایسا نہیں ہے جو عدم رواداری کو پسند کرتا ہے ۔
اندرانی مکرجی کا آواز کے نمونہ کے معائنہ سے اتفاق
ممبئی ۔ 3 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) شینا بورا قتل کیس میں اصل ملزم اندرانی مکرجی نے اپنی آواز کے نمونے کا ٹسٹ کروانے سے آج ایک عدالت میںاتفاق کرلیا ہے ۔ سی بی آئی یہ ٹسٹ کروانا چاہتی ہے جس نے شینا بورا کے کچھ فون کالس ریکارڈ کئے ہیں۔ سی بی آئی نے گذشتہ ہفتے عدالت میں درخواست دائر کرتے ہوئے اندرانی مکرجی کی آواز کے نمونہ کے معائنہ کروانے کی اجازت طلب کی تھی ۔ اندرانی نے آج عدالت کو بتایا کہ اس نے اس معائنہ کیلئے منظوری دیدی ہے ۔ مجسٹریٹ آر وی ادونے نے سی بی آئی کی درخواست کو منظوری دیدی اور یہ ہدایت دی کہ یہ ٹسٹ کرواتے ہوئے جیل کے قواعد و ضوابطل کی پابندی کی جانی چاہئے ۔

TOPPOPULARRECENT