Monday , October 23 2017
Home / کھیل کی خبریں / ہندوستان کو آج سیریز بچانے کیلئے کامیابی ضروری

ہندوستان کو آج سیریز بچانے کیلئے کامیابی ضروری

دھون اور رائنا کے ناقص مظاہروں سے کپتان دھونی پر مزید دباؤ

چینائی 21 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) کپتان مہندر سنگھ دھونی کل جب جنوبی افریقہ کے خلاف یہاں چوتھے ونڈے کے لئے اپنی ٹیم کے ساتھ میدان پر اُتریں گے تو صحیح بیاٹنگ اشتراک کے علاوہ مقابلے میں کامیابی کے لئے اِن پر دباؤ ہوگا کیوں کہ جنوبی افریقی ٹیم 5 مقابلوں کی رواں ونڈے سیریز میں 2-1 کی سبقت حاصل کرچکی ہے اور وہ ایک اور کامیابی کے ذریعہ ہندوستان کے اِس دورہ پر ٹوئنٹی 20 سیریز کے بعد ونڈے سیریز پر بھی قبضہ کرسکتی ہے تو دوسری جانب مہندر سنگھ دھونی کی قیادت میں ہندوستانی ٹیم کو ایک اور سیریز کی شکست ہوگی جس کے بعد اِن کی قیادت پر کی جانے والی تنقیدوں میں اضافہ ہوسکتا ہے۔ ہندوستان کو رواں برس کے اوائل پہلے ہی بنگلہ دیش کے خلاف 2-1 کی ناکامی برداشت کرنی پڑی ہے۔ میدان پر روی چندرن اشون کے زخمی ہونے کے بعد مسائل موجود ہیں تو میدان کے باہر لیگ اسپنر امیت مشرا پر خاتون کو ہراساں کرنے کا الزام کا سامنا ہے۔ جیسا کہ بنگلور پولیس اسٹیشن میں ایک خاتون نے لیگ اسپنر کے خلاف ہراسانی کی شکایت درج کروائی ہے۔ نشانہ کا تعاقب ہندوستان کے لئے مسئلہ بن رہا ہے جس کا خود کپتان مہندر سنگھ دھونی نے اعتراف کرتے ہوئے کہا ہے کہ ٹیم کو اس مسئلہ پر قابو پانا ہے کہ کونسا کھلاڑی 5 ، 6 اور 7 ویں نمبر پر کھیلے گا کیوں کہ یہ وہ تین مقامات ہیں جس پر بیاٹنگ کرنے والے کھلاڑی کو بڑے شاٹس کھیلنے کے علاوہ مقابلہ کو اپنی ٹیم کے حق میں کرنا پڑتا ہے۔ دریں اثناء بڑھتی عمر کے باعث دھونی نے خود فیصلہ کیا ہے کہ وہ بیاٹنگ کے لئے اوپری نمبر پر میدان پر اُتریں گے جبکہ اجنکیا راہنے کو پانچویں یا چھٹے نمبر پر بیاٹنگ کروائی جاسکتی ہے۔ ویراٹ کوہلی نے گزشتہ مقابلہ میں 77 رنز کی اننگز کھیلی ہے

لیکن وہ مقابلے میں اپنی ٹیم کو کامیابی سے ہمکنار نہ کرسکے۔ اس کے علاوہ وہ نمبر تین پر ہی بیاٹنگ کرنے کو ترجیح دے رہے ہیں۔ سریش رائنا کا ناقص فارم ہندوستان کے لئے مسائل پیدا کررہا ہے جیسا کہ وہ گزشتہ تین مقابلوں میں صرف تین رنز کی اسکور کرپائے ہیں۔ حیران کن طور پر شکھر دھون جنھوں نے گزشتہ تین ٹسٹ مقابلوں میں تین سنچریاں اسکور کی ہیں لیکن ونڈے میں ان کے مظاہرے انتہائی مایوس کن ہیں جیسا کہ تین مقابلوں میں وہ صرف 59 رنز کرپائے ہیں۔ ہندوستان کے لئے اننگز کے آغاز میں روہت شرما کا بہترین فارم خوش آئند ہے جیسا کہ محدود اوور کی کرکٹ میں سیدھے ہاتھ کے اوپنر اپنی زندگی کے بہترین دور سے گزر رہے ہیں اور اُمید ہے کہ پھر ایک مرتبہ وہ اہم مقابلہ میں کل ٹیم کو بہتر شروعات فراہم کریں گے۔ نمبر 4 پر خود کپتان دھونی بہتر مظاہرہ کریں گے جیسا کہ 3 مقابلوں میں وہ 173 رنز کے ذریعہ ہندوستان کے لئے سب سے زیادہ رنز بنانے وا لے بیٹسمنوں کی فہرست میں دوسرے مقام پر ہیں جبکہ روہت شرما 218 رنز کے ساتھ پہلے مقام پر موجود ہیں۔ ہندوستانی بولنگ شعبہ پھر ایک مرتبہ بھونیشور کمار کی جانب سے ابتدائی اوورس کے مظاہرہ پر انحصار کرے گا۔ جبکہ اشون کی غیر موجودگی میں ہندوستانی اسپنرس پر بھی دباؤ بڑھا رہا ہے۔ دوسری جانب جنوبی افریقی ٹیم کو زخمی مرنی مرکل کی شرکت پر لگے سوالیہ نشان اور جے پی ڈومینی کے سیریز سے باہر ہونے کے مسائل کا سامنا ہے حالانکہ ڈومنی کے مقام پر ڈین ایلگر کو طلب کیا گیا ہے۔ اوپنر کوئنٹن ڈی کاک سنچری اسکور کرتے ہوئے فارم میں واپسی کی ہے لیکن ہاشم آملہ سے ٹیم کو بڑی اننگز کا ہنوز انتظار ہے۔

TOPPOPULARRECENT