Friday , September 22 2017
Home / ہندوستان / ہندوستان کو یوروپی یونین سے 24 ارب امریکی ڈالر کی سرمایہ کاری

ہندوستان کو یوروپی یونین سے 24 ارب امریکی ڈالر کی سرمایہ کاری

یوروپی یونین بڑے پیچیدہ مسائل پر لچکدار رویہ اختیار کرنے تیار ، عنقریب آزادانہ تجارت معاہدہ پر بات چیت کا احیاء متوقع

نئی دہلی۔ 9 اگست (سیاست ڈاٹ کام) آزاد تجارتی معاہدہ مذاکرات کے باوجود جو یوروپی یونین کے ساتھ ہورہے تھے، تعطل کا شکار ہوجانے کے باوجود ہندوستان میں 24 ارب امریکی ڈالر مالیتی سرمایہ کاری 28 رکنی یوروپی یونین سے گزشتہ تین سال کے دوران حاصل کی ہے۔ سرکاری اعداد و شمار کے بموجب ہندوستان کو 6 ارب 23 کروڑ امریکی ڈالر مالیتی راست غیرملکی سرمایہ کاری 2012-13ء کے دوران یوروپی یونین سے حصص کی آمد کی شکل میں حاصل ہوئی ہی جس سے 9 ارب 6 کروڑ امریکی ڈالر مالیتی سرمایہ کاری آئندہ سال متوقع ہے۔ راست غیرملکی سرمایہ کاری کی آمد 2014-15ء میں 8 ارب 20 کروڑ امریکی ڈالر مالیتی رہی جو گزشتہ سال کی بہ نسبت کم تھی۔ 2015-16ء میں اضافہ کی توقع ہے۔ جاریہ مالی سال کے پہلے دو مہینوں میں ایک ارب 39 کروڑ امریکی ڈالر سرمایہ کاری ہوچکی ہے۔ بحیثیت مجموعی ہندوستان کو 24 ارب 91 کروڑ امریکی ڈالر مالیتی راست غیرملکی سرمایہ کاری حصص کی آمد کی شکل میں اپریل 2012 اور مئی 2015ء کے درمیان حاصل ہوچکی ہے۔ یوروپی یونین ہندوستان کا سب سے بڑا تجارتی شراکت داری ہے اور باہمی تجارت میں مزید اضافہ کا امکان ہے۔ اگر ممالک اپنے دیرینہ آزاد تجارتی معاہدہ پر متفق ہوسکیں، جسے سرکاری طور پر وسیع البنیاد سرمایہ کاری اور تجارتی معاہدہ قرار دیا جاتا ہے۔ ہندوستان نے چہارشنبہ کے دن مذاکرات ملتوی کردیئے تھے

 

اور جاریہ ماہ کے اواخر میں مجوزہ معاہدہ کیلئے مذاکرات کا احیاء ہوگا۔ اس طرح دو سال کی امتناع کی مدت بھی ختم ہوجائے گی جو یوروپی یونین نے تقریباً 700 مقامی عدلیہ پر عائد کیا ہے جنہیں طبی جانچ کے مرحلے سے ہندوستان کی جی وی کے بائیو سائنسیس نے اعداد و شمار کے غیردرست ہونے کی بنیاد پر جانچ کے مرحلے سے گذرا تھا۔ مارچ میں یوروپی یونین نے ہندوستان کی تجویز پر ردعمل ظاہر نہیں کیا ، جس میں وزیراعظم نریندر مودی کے دورۂ بروسیلز کی بات کہی گئی تھی جو یوروپی یونین کا ہیڈکوارٹر ہے۔ اپریل میں نریندر مودی نے فرانس ، جرمنی اور کینیڈا کا دورہ کیا ہے تاہم انہیں حال ہی میں ہند ۔ یوروپی یونین چوٹی کانفرنس کیلئے مدعو کیا گیا جبکہ G-20 چوٹی کانفرنس اس کے پہلے یا بعد ترکی میں منعقد کی جائے گی۔ آخری ہند ۔ یوروپی یونین چوٹی کانفرنس 2012ء میں ہوئی تھی۔ یوروپی یونین اور ہندوستان کے درمیان دو رخی تجارت تقریباً 99 ارب امریکی ڈالر مالیتی 2014-15ء میں ہوچکی ہے جبکہ 2013-14ء میں اس کی مالیت 101 ارب 50 کروڑ امریکی ڈالر مالیتی تھی۔ آزادانہ تجارتی معاہدہ کے مذاکرات کئی پیچیدہ مسائل کی بنیاد پر ملتوی کردیئے گئے۔ مذاکرات کا آخری مرحلے مئی 2013ء میں منعقد ہوا تھا۔ یوروپی یونین کا ادعا ہے کہ وہ تمام بڑے مسائل پر لچکدار رویہ اختیار کرنے کیلئے تیار ہیں جن کی وجہ سے آزاد تجارتی معاہدہ کے مذاکرات تعطل کا شکار ہوگئے تھے چنانچہ دونوں فریقین کیلئے یہ معاہدہ کافی فائدہ مند ثابت ہوسکتا ہے۔ یوروپی یونین انشورنس ، بینکنگ اور چلر فروشی کو ہندوستان کے ساتھ معاشی تعلقات کے بڑے شعبہ سمجھتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT