Sunday , August 20 2017
Home / سیاسیات / ہندوستان کے 99 فیصد عوام میں مذہبی رواداری جاگزیں

ہندوستان کے 99 فیصد عوام میں مذہبی رواداری جاگزیں

معمولی باتوں کو سنسنی خیز بنایا جارہا ہے، بدھ مت کے پیشوا دلائی لاما کا تاثر
بنگلورو ۔ 7 ۔ ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) عدم تحمل پر جاریہ بحث و تکرار کے دوران تبت کے روحانی پیشوا دلائی لاما نے آج کہاکہ مجموعی طور پر ہندوستانی عوام ، مذہبی روادار ہوتے ہیں لیکن بعض سیاستداں اور بعض میڈیا کے حلقے معمولی باتوں ، کو سنسنی خیز بناکر پیش کر رہے ہیں۔ دلائی لاما نے ایک انٹرویو میں کہا کہ 99 فیصد ہندوستانی عوام ہنوز مذہبی رواداری اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی پر ایقان رکھتے ہیں ۔ ممکن ہے کہ ایک فیصد لوگ اس کے مخالف ہوں گے۔ اگرچیکہ میرے خیال میں بعض سیاستداں منفی سوچ رکھتے ہیں لیکن یہ ان کی انفرادی رائے ہوسکتی ہے جبکہ میڈیا سے وابستہ بعض افراد سنسنی پیدا کرنے کیلئے معمولی باتوں کو بڑھا چڑھا کر پیش کر رہے ہیں۔ بدھ مت کے روحانی پیشوا دلائی لاما جو کہ بنگلورو کے 3 روزہ دورہ پر ہیں۔ بتایا کہ اخبارات میں کئی ایک مسائل کو اجاگر کیا جاتا ہے لیکن انہیں سنجیدگی سے نہیں لیا جاتا ۔ ان تنقیدوں پر یہ سوال اٹھائے جانے پر کہ ایمرجنسی اور 1984 ء کے مخالف سکھ فسادات کے موقع پر مصنفین نے اپنے ایوارڈز واپس کیوں نہیں کئے؟ دلائی لاما نے کہا کہ امریکی صدر بارک اوباما نے وزیراعظم نریندر مودی کو ایک راست بات ز اور صاحب بصیرت لیڈر قرار دیا ہے اور مختلف ممالک میں ان کے دوروں سے ہندوستان کی توقیر (امیج) میں اضافہ ہوا ہے  اور یہ راستہ ہندوستان کوایک معاشی طاقت بنانے کی سمت گامزن کرتا ہے ۔ اگرچیکہ  وہ اس کی تفصیلات سے لاعلم ہیں لیکن یہ واضح نظر آرہا ہے کہ ہندوستان کی معیشت تیزی کے ساتھ فروغ پارہی ہے اور بہت جلد  طاقتور ملک بن کر ابھرے گا۔ ایک سوال کے جواب میں دلائی لاما نے مابعد گودھرا فسادات نریندر مودی کے مبینہ تعلقات کے بارے میں عدم واقفیت کا اظہار کیا اور یہ تنازعہ صرف انتخابات کے وقت اٹھایا جاتا ہے اور اسطرح کی تنقیدیں انتخابات کے دوران تبتی برادریوں کے خلاف بھی کی جاتی ہیں یا پھر سیاسی اخلاقات شدت اختیار کرجاتے ہیں۔ تاہم یہ تنقیدیں ، چین اور شمالی کوریا کی حکومتوں سے بہتر ہیں جہاں پراختلاف رائے کے اظہار کی آزادی بھی نہیں ہے۔  یہ دریافت کئے جانے پر کہ عدم تحمل کے مسئلہ پر ادیبوں کی جانب سے ایوارڈس کی واپسی کو حق بجانب قرار دیا جاسکتا ہے ۔ دلائی لاما نے کہا کہ میں تفصیلات نہیں جانتا لیکن بعض شخصیتوں میں بے چینی اور اضطراب پایا جاتا ہے اور ایوارڈس واپسی کے صحیح یا …… فیصلہ کے قطع نظر آزادی کا مزہ بھی لے رہے ہیں اور ہم اس کا باریک بینی سے مشاہدہ اور رتجزیہ کر رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT