Wednesday , October 18 2017
Home / شہر کی خبریں / ہندو مسلم اتحاد کے فروغ میں شیام سندر کا نمایاں کردار

ہندو مسلم اتحاد کے فروغ میں شیام سندر کا نمایاں کردار

ٹینک بینڈ پر مجسمہ نصب کرنے کا مطالبہ، سالگرہ پر گول میز کانفرنس سے مختلف شخصیتوں کا خطاب
حیدرآباد۔27ڈسمبر(سیاست نیوز) خسرو دکن بی شیام سندر کی 107ویں سالگرہ کے موقع پر وائس آف تلنگانہ ‘1969تلنگانہ مومنٹ فاونڈرس فورم او ردیگر تنظیمو ںکی جانب سے ایک گول میز کانفرنس کا سوماجی گوڑہ پریس کلب میںمنعقد ہوئی۔ ڈاکٹر کولیوری چرنجیوی نے نگرانی کی ۔ جس میں جناب رحیم الدین کمال‘ کیپٹن ایل پانڈو رنگا ریڈی‘ رام چندر رائوت‘ سرید ھر دھرماصنم‘ کے سری رام‘ چندرشیکھر ایڈوکیٹ‘ ڈاکٹر یٰسین ہاشمی‘ ایم وینکٹیشوا سوامی‘شریمتی جوپکا سبدراھا‘ نعیم اللہ شریف‘ صغرا بیگم اور دیگر نے شرکت کرتے ہوئے بی شیام سندر کی دلت مسلم روادری کے کارناموں پر روشنی ڈالی۔ اپنے صدراتی خطاب میںڈاکٹر چرنجیوی نے کہاکہ بی شیام سندر ریاست حیدرآباد کی قد آور شخصیت تھے اور پہلے دلت تھے جنھوں نے ریاست حیدرآباد کی نمائندگی کرتے ہوئے پولیس ایکشن کے خلاف یونائٹیڈ سکیورٹی کونسل سے رجو ع ہوئے ۔ بی شیام سندر کی خدمات سے متاثرہوکر نظام ہشتم نے انہیں خسرو دکن کے لقب سے نوازا تھا۔ انہوں نے بی شیام سندر کو دلت مسلم اتحاد کا پہلا علمبردار بھی قراردیا جنھوں نے 80سال قبل فیڈریشن آف میناریٹی قائم کرتے ہوئے پسماندگی کے شکار طبقات کوایک پلیٹ فارم پر لانے کی کوشش کی ۔ ڈاکٹرچرنجیوی نے مزیدکہاکہ 1972میں کل ہند مسلم پولٹیکل کنونشن کے انعقاد کا بھی اعزاز بی شیام سندر کوحاصل ہے اس کے علاوہ بھارتی بھیم سینا کی بنیاد ڈالکر بی شیام سندر نے دلت مسلم اتحاد کو فروغ دینے میںاہم رول ادا کیا ہے ۔ ڈاکٹر چرنجیوی نے کہاکہ بی شیام سندر نے یوین سکیورٹی کونسل اور انڈین یونین سے درخواست کی کہ ریاست حیدرآباد کو خود مختار ریاست کا درجہ دیاجائے کیو نکہ آصف جاہی دور حکومت میں ریاست حیدرآباد کے دلت طبقات کیساتھ جوانصاف کیاگیا اس کی مثال پورے ملک میںکسی اور جگہ نہیں ملتی ہے۔ڈاکٹر چرنجیوی نے خسرو دکن بی شیام سندر کا مجسمہ ٹینک بنڈ پر نصب کرتے ہوئے ریاست حیدرآباد کے عظیم سپوت کوخراج پیش کرنے کا حکومت تلنگانہ سے مطالبہ کیا۔

TOPPOPULARRECENT