Friday , September 22 2017
Home / شہر کی خبریں / ہندو نوجوان نے مسلم لڑکی کو بھگاکر شادی رچالی

ہندو نوجوان نے مسلم لڑکی کو بھگاکر شادی رچالی

آریہ سماج مندرمیں نام تبدیل،،لڑکی کو بالغ قرار دیا
حیدرآباد۔/24مئی، ( سیاست نیوز) ایک ہندو شخص نے کم عمر مسلم لڑکی کو بھگاکر آریہ سماج مندر میں شادی رچالی اور اسے ریکارڈ میں بالغ بتایا گیا۔ تفصیلات کے بموجب موسی رام باغ ملک پیٹ کی رہنے والی 17سالہ لڑکی کو اے رتناکر گوڑ نامی نوجوان نے  اپنے ساتھ آریہ سماج مندر لے گیا اور وہاں شادی رچالی۔ یہ لڑکی ملک پیٹ میں ڈائیگناسٹک سنٹر میں ملازمت کرتی ہے اور  اس کا مسلم نام تبدیل کرتے ہوئے نتیا رکھا گیا۔ اس لڑکی کی عمر 17 سال ہے لیکن آریہ سماج انتظامیہ نے ریکارڈ میں 18سال درج کرتے ہوئے اسے بالغ بتایا ہے۔ رتناکرگوڑ ساکن دلسکھ نگر لڑکی کو اپنے ہمراہ لے جانے پر لڑکی کے والدین نے ملک پیٹ پولیس اسٹیشن میں 22مئی کو ایک تحریری شکایت درج کروائی جس میں  بتایا کہ ان کی لڑکی اچانک لاپتہ ہوگئی ہے اور انہیں رتناکر نامی نوجوان پر شبہ ہے۔ پولیس نے اس سلسلہ میں اغوا کا ایک مقدمہ درج کرکے تحقیقات کا آغاز کیا تھا اور رتناکر کو آج پولیس نے گرفتار کرکے عدالتی تحویل میں دے دیا۔

TOPPOPULARRECENT