Tuesday , August 22 2017
Home / Top Stories / ہند۔ پاک مذاکرات میں کشمیری عوام کی شمولیت ناگزیر

ہند۔ پاک مذاکرات میں کشمیری عوام کی شمولیت ناگزیر

پاکستانی ہائی کمشنر سے ملاقات کے بعد صدر نشین حریت کانفرنس میر واعظ عمر فاروق کا بیان
نئی دہلی۔/24مارچ، ( سیاست ڈاٹ کام ) اعتدال پسند حریت کانفرنس نے آج کہا ہے کہ ہندوستان اور پاکستان کو سنجیدہ اور نتائج پر مبنی مذاکرات کیلئے پیشرفت کرنا چاہیئے تاکہ کئی عشروں سے معرض التواء مسائل بشمول کشمیر کی یکسوئی کیلئے راہ ہموار ہوسکے اور یہ اُمید ظاہر کی کہ معتمدین خارجہ کی سطح پر بات چیت کے دوران معلنہ جامع مذاکرات دیرینہ خواب کو شرمندہ تعبیر کرنے میں سنگ میل ثابت ہوں گے۔ پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط سے ملاقات کے بعد حریت کانفرنس کے صدرنشین میر واعظ عمر فاروق نے آج میڈیا سے کہا کہ ہمارے پاس بہت کچھ وقت ہے اور ہم یہ اعادہ کرتے ہیں کہ دونوں ممالک کے درمیان مذاکرات کے خلاف نہیں بلکہ ہمارا یہ اٹوٹ ایقان ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان بامعنی مذاکرات میں دیرینہ مسائل کی یکسوئی میں کارگرثابت ہوسکتے ہیں۔ اس موقع پر میر واعظ کے ہمراہ کئی ایک علحدگی پسند قائدین بشمول عبدالغنی بھٹ اور مولانا عباس انصاری بھی تھے یہ وضاحت کی کہ کشمیریوں میں اعتماد بحال کرنے کیلئے ہندوستان اور پاکستان کو اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔ اگر کسی بھی فریق کی جانب سے سخت گیر رویہ اختیار کیا گیا تو جنوبی ایشیاء میں امن و استحکام کے مفاد میں نہیں ہوگا

اور جب مسئلہ کشمیر پر مذاکرات شروع کئے جاتے ہیں تو دونوں فریقوں ( ہند۔ پاک ) کو جموں و کشمیر کے عوام کے دیرینہ خواہشات کو پیش نظر رکھنا چاہیئے۔اس سوال پر کہ حریت کانفرنس یہ کیسے دعویٰ کرسکتی ہے کہ وہ کشمیری عوام کی حقیقی نمائندہ جماعت ہے، جس پر میر واعظ نے کہا کہ پہلے یہ کہ ہم نے ایسا کوئی دعویٰ نہیں کیا دوسرے یہ کہ اگر ہمیں عوام کی تائید حاصل نہیں ہے تو ہندوستان اور پاکستان کے درمیان مسئلہ کشمیر کیونکر پیدا ہوتا۔ انہوں نے بتایا کہ پٹھان کوٹ میں فضائی اڈہ پر حملہ کی تحقیقات کیلئے پاکستان سے خصوصی ٹیم کی آمد ایک اہم اقدام ہے اور ہمیں اُمید ہے کہ دونوں ممالک مشترکہ طور پر کارروائی کرتے ہوئے پٹھان کوٹ حملہ کے مجرمین کو کیفر کردار تک پہنچائیں گے۔

میر واعظ نے حریت کانفرنس قائدین کی پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط سے ملاقات کو بعض گوشوں کی جانب سے شک و شبہ کی نظر سے دیکھنے پر افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ ان لوگوں کی فہم و فراست پر حیرت ہوتی ہے جبکہ ہم ہندوستان اور پاکستان کو قریب لانے کی کوشش میں ہیں لیکن بعض لوگ ہمیں ’ دغا باز ‘ قرار دے رہے ہیں۔ میر واعظ نے یہ اُمید ظاہر کی کہ وزیر اعظم نریندر مودی بھی اٹل بہاری واجپائی کے ویژن پر عمل پیرا ہوں گے جنہوں نے انسانیت کے دائرہ کار میں مسائل حل کرنے کی تجویز پیش کی۔انہوں نے کہا کہ حریت کانفرنس نے ہمیشہ ہند۔ پاک مذاکرات کا خیرمقدم کیا اور مذاکرات کو بامقصد اور کارآمد بنانے کیلئے کشمیری عوام کو شامل کرنا چاہیئے۔ بعد ازاں شدت پسند حریت کانفرنس کے صدر نشین سید علی شاہ گیلانی نے اپنے ہمخیال لیڈر کے ساتھ پاکستانی ہائی کمشنر سے ملاقات کی۔

TOPPOPULARRECENT