Thursday , October 19 2017
Home / شہر کی خبریں / ہند و پاک کرنسی اِنک ، چاندی کے دھاگے کا سپلائر ایک ہی : اسد اویسی

ہند و پاک کرنسی اِنک ، چاندی کے دھاگے کا سپلائر ایک ہی : اسد اویسی

اس سے نمٹنے کے لیے حکومت کی حکمت عملی کیا ہے ، حیدرآباد ایم پی کا سوال
حیدرآباد ۔ 15 ۔ نومبر : ( پی ٹی آئی ) : اے آئی ایم آئی ایم صدر اسد الدین اویسی نے آج ادعا کیا کہ ہندوستان اور پاکستان کے لیے کرنسی نوٹس میں استعمال کی جانے والی انک ( روشنائی ) اور چاندی کا دھاگہ سربراہ کرنے والا ایک ہی ہے اور یہ جاننا چاہا کہ اس سے نمٹنے کے لیے حکومت کی حکمت عملی کیا ہے ۔ حیدرآباد لوک سبھا کے رکن نے یہاں پی ٹی آئی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انک ( روشنائی ) اور چاندی کے دھاگے کا سپلائر پاکستان کو بھی وہی چیز سربراہ کررہا ہے ۔ انہوں نے پوچھا کہ پھر حکومت اس کے بارے میں ( نقلی نوٹوں کے چلن کی لعنت کو ختم کرنے کے لیے ) کیا کررہی ہے ۔ یہ کہتے ہوئے کرنسی نوٹوں کے چلن کو بند کرنے کے حکومت کے اقدام سے ہر ایک کو کافی مشکلات اور دشواریوں کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ اویسی نے کہا کہ حکومت کو زیادہ وقت دینا چاہئے ۔ کم از کم ایک دو ماہ کا وقت عوام کو ان کے پرانے نوٹس کو تبدیل کرنے کے لیے دینا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر ہر ایک بڑی رقم جمع کروائے تو اسے یقینا ٹرئیک کیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ فلپائینس میں جب اس طرح کا اقدام ( کرنسی نوٹوں کے چلن کو بند ) کیا گیا تھا تو عوام کو کافی وقت دیا گیا تھا ۔ یوروپ میں بھی جب یورو کو متعارف کیا گیا تھا تو عوام کو کافی وقت دیا گیا ۔ اس کے لیے عوام کو زیادہ وقت دینا مختلف ممالک میں اصول و قاعدہ رہا ہے ۔ اویسی نے کہا کہ کل جب پارلیمنٹ کا سرمائی سیشن شروع ہوگا تو وہ کرنسی نوٹوں کو منسوخ کرنے کے اقدام پر تبادلہ خیال کے لیے تحریک التواء کے لیے ایک نوٹس دیں گے ۔ جس کی وجہ انہوں نے کہا کہ دیہی اور شہری معیشت بری طرح متاثر ہوگئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو نئی شروع کی گئی 2000 روپئے کی نوٹ کو استعمال کرنے میں کافی دشواریوں اور مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے کیوں کہ کسی کے پاس چلر نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہماری 86 فیصد کرنسیز 500 روپئے اور 1000 روپئے کے نوٹس کی شکل میں ہیں ۔ آپ ( حکومت ) نے اس کے لیے کوئی منصوبہ نہیں بنایا ۔ آپ نے اس کے لیے تیاری نہیں کی ۔ اے ٹی ایم مشینس کے ری ۔ کیلبریشن کے لیے 100 سے زیادہ دن درکار ہوں گے ۔ بہت بڑا معاملہ یہ ہے کہ میرا پیسہ بینک میں ہے لیکن میں اسے نکال نہیں سکتا ۔۔

TOPPOPULARRECENT